حوثی جیلوں سے رہا یمنی فنکار کی چھت سے لٹکتی لاش مل گئی

محدنی المحدنی نے ملیشیا کے حراستی مراکز میں تشدد کے باعث نفسیاتی مسائل کا شکار ہو کر موت کو گلے لگایا: ذرائع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمنی شہریوں کو ایک مشہور فنکار کی لاش اس کے گھر کی چھت پر لٹکی ہوئی مل گئی۔ فنکار محدنی المحدنی کو دہشت گرد حوثی ملیشیا کی قید میں شدید مار پیٹ اور توہین آمیز سلوک کا نشانہ بنایا جاتا رہا تھا۔ وہ کچھ عرصہ قبل ہی حوثی ملیشیا کی جیل سے رہا ہوئے تھے۔

یمنی میڈیا ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ یمن کے شمال میں واقع عمران گورنری کے ثلا ضلع، جو حوثی ملیشیا کے زیر کنٹرول ہے، میں شہریوں کو جمعرات کو مشہور فنکار محدنی المحدنی کی لاش چھت پر لٹکی ہوئی ملی۔ وہ کچھ گھنٹے قبل غائب ہو گئے تو ان کی تلاش شروع کی گئی۔ تلاش کے دوران ان کی لاش ان کے گھر میں چھت سے لٹکی ہوئی مل گئی۔

اغوا اور تشدد

ذرائع نے بتایا کہ مصور محدنی المحدنی حوثی ملیشیا کےحراستی مراکز میں بہیمانہ سلوک اور تشدد کے باعث نفسیاتی عوارض کا شکار ہو گیا تھا۔ اس کے بیمار ہونے پر اسے رہا کر دیا گیا تھا۔ فروری میں اسے اور مزید 4 افراد کو 7 سال قیدکی سزا سنائی گئی تھی۔ یہ دیگر چار افراد منصور الفقيہ، عصام الزندانی، محمد الحرازي اور مختار الجبلی تھے۔

بدنیتی پر مبنی الزام

حوثی ملیشیا نے محدنی پر اپنے مخالفین کے لیے کام کرنے والے سیل کا رکن ہونے کا الزام لگایا، ایک بدنیتی پر مبنی الزام تھا۔ ملیشیا اپنے مخالفین پر اکثر وبیشتر اسی قسم کا الزام عائد کرکے اسے انتقام کا نشانہ بناتی ہے۔

خیال رہے حوثی ملیشیا کے زیر کنٹرول علاقوں میں خودکشیوں میں غیر معمولی اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ اس رجحان کی وجہ زندگی اور معاشی حالات کی بگڑتی صورت حال اور ان علاقوں میں ملیشیا کی جانب سے برتا جانے والا ظالمانہ سلوک ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں