ایران میں احتجاج پربرطانیہ سے تعلق رکھنے والے دُہری شہریت کے حامل افراد گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کی سپاہ پاسداران انقلاب نے اتوار کے روز سات افراد کوگرفتار کیا ہے۔ان میں برطانیہ سے تعلق رکھنے والے دُہری شہریت کے حامل افراد بھی شامل ہیں۔

ایران کے سرکاری میڈیا نے ایک بیان میں کہا ہے کہ برطانیہ کا شہریت کے حامل حالیہ مظاہروں کے سات اہم رہ نماؤں کو پاسداران انقلاب کی انٹیلی جنس سروسز نے حراست میں لیا ہے۔ان میں دُہری شہریت کے حامل افراد بھی شامل ہیں جو ملک چھوڑنے کی کوشش کررہے تھے۔

ایرانی حکومت ملک میں ستمبر سے جاری بدامنی کا الزام مظاہرین پرعاید کرتی ہے جو اس کے بہ قول سرکاری اور نجی املاک کو نقصان پہنچانے پر تلے ہوئے ہیں۔اس نے یہ بھی الزام عاید کیا ہے کہ مظاہرین دشمنوں کے تربیت یافتہ اور مسلح ہیں۔

ایران میں وسط ستمبر سےکرد خاتون مہسا امینی کی ہلاکت کے ردعمل میں مظاہرے جاری ہیں اور مظاہرین کے خلاف ایرانی حکام کا کریک ڈاؤن بھی جاری ہے۔اس دوران میں ہزاروں افراد کو گرفتار کیا جاچکا ہے۔

زندگی کے تمام شعبوں سے تعلق رکھنے والے ایرانی اس احتجاجی تحریک میں شامل ہوچکے ہیں اور 1979 کے انقلاب کے بعد برسراقتدار مذہبی قیادت کے لیے یہ سب سے بڑے چیلنجوں میں سے ایک ہے۔ ایرانی حکام مغربی طاقتوں پرملک میں بدامنی کوہوا دینے کے الزامات عاید کرتے ہیں۔انھوں نے بالخصوص اسرائیل اورامریکا پرایران کے داخلی امور میں مداخلت کے الزامات عاید کیے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں