بھارت ایک سال میں 80 کروڑلوگوں کے لیے مفت اناج پر 24 ارب ڈالر خرچ کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

بھارت ایک سال میں قریباً 80 کروڑلوگوں کو مفت اناج مہیّاکرے گا۔

وزیرخوراک پیوش گوئل نے کابینہ کے اجلاس کے بعد کہا کہ حکومت اس پروگرام پربیس کھرب روپے (24.1 ارب ڈالر) خرچ کرے گی۔ یہ نیا اقدام دنیا میں اناج کے دوسرے سب سے بڑے پیداکنندہ ملک میں گندم اور چاول کے صارفین میں اہل افراد کے لیے زرتلافی والے اناج کے سابقہ پروگرام کی جگہ لے گا۔

زرتلافی پراناج کے علاوہ حکومت وبائی مرض کے آغاز سے ہی لاکھوں بھارتیوں کو ہر ماہ 5 کلو گرام گیہوں یا چاول دے رہی تھی۔ماضی میں اس امدادی پروگرام میں متعدد مرتبہ توسیع کی گئی ہے۔اب یہ اس ماہ کے آخر میں ختم ہورہا ہے۔ بہت سے صارفین اب اوپن مارکیٹ سے دوبارہ اناج خریدکرسکتے ہیں۔اس سے ممکنہ طور پر قیمتوں میں اضافہ ہوسکتا ہے اورافراطِ زر کومحدود رکھنے کے لیے مرکزی بینک کی کوششوں کو تازہ چیلنجزدرپیش ہوسکتے ہیں۔

وزیراعظم نریندر مودی کی حکومت کا یہ تازہ اعلان 2023 میں متعدد ریاستوں میں انتخابات اور 2024 میں عام انتخابات سے قبل سامنے آیا ہے۔

ان کی حکومت نے کووِڈ-19 کی وجہ سے ہونے والی معاشی تباہی کے اثرات سے لوگوں کو بچانے کے لیے 2020 میں مفت کھانے کاپروگرام شروع کیا تھا۔اس کے بارے میں خیال کیاجاتا ہے کہ اس سے حکمراں بھارتیہ جنتا پارٹی کو بعض بڑی ریاستوں میں انتخابات جیتنے میں مدد ملی ہے۔اگرچہ یہ بہت مقبول ہے، لیکن اس نے حکومت کی پہلے سے دباؤ کا شکار مالیات پرمزید دباؤ ڈالا، جس کی وجہ سے اسے بجٹ کے وسیع فرق کوپاٹنے کے لیے مارکیٹ سے زیادہ قرض لینے پر مجبور ہونا پڑا۔

دنیا کے سب سے بڑے فوڈ پروگرام میں ری اسٹرکچرنگ کے بعد آیندہ سال حکومت کا سبسڈی بل مارچ 2023 میں ختم ہونے والے مالی سال میں تیس کھرب روپے سے زیادہ کے تخمینہ اخراجات سے کم ہونے کا امکان ہے۔ تاہم یہ قریباً دس کھرب روپے سے دگنا ہوگا جو وبائی مرض سے پہلے فوڈ سب سڈی پر خرچ کیا جارہا تھا۔

اجناس کی بڑھتی ہوئی قیمتوں اوردنیا میں غذائی تحفظ کے خدشات کے پیش نظربھارت نے دنیا کے دوسرے سب سے زیادہ آبادی والے ملک میں سستے اناج کی دستیابی کو یقینی بنانے کی کوشش کی ہے۔اس نے اس سال گندم اور چاول کی برآمدات کو محدود کر دیا کیونکہ خراب موسم نے فصل کو نقصان پہنچایا، کھانے کی قیمتوں پر دباؤ میں اضافہ کیااورعالمی سطح پرزرعی منڈیوں کو ہلا کررکھ دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں