ریاض کے العزیزیہ محلے کی ساٹھ سال پرانی تاریخ نامور مورخ کی زبانی

"گرین ریاض" پروگرام کا آغاز آج "العزیزیہ کالونی" سے کیا جائیگا، محلہ کی 60 کے دہائی میں قائم کیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ریاض کا العزیزیہ محلہ ایک منفرد تاریخ رکھتا ، یہ محلہ شجر کاری کے حوالے سے ایک قدیم تاریخ رکھتا ہے، یہ وہ محلہ ہے جہاں آج جمعرات کو "گرین ریاض" کا منصوبہ شروع کیا جا رہا ہے۔ اس مہم کے تحت باغات، سکول، مساجد، سڑکوں اور گلیوں سمیت 120 محلوں میں پودے اور درخت لگائے جائیں گے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے ساتھ اپنے انٹرویو میں سماجی مورخ منصور العساف نے ریاض کے جنوب میں واقع اس محلے کی تاریخ کا انکشاف کیا جسے شاہ عبدالعزیز بن عبدالرحمن آل سعود کے بعد سے انہیں کے نام کی بنا پر العزیزیہ کہا جاتا تھا۔

منصور العساف
منصور العساف

انہوں نے وضاحت کی کہ تاجر صالح بن عبدالوہاب الصانع نے ساٹھ کی دہائی کے وسط میں سیمنٹ فیکٹری کی تعمیر سے ایک سال قبل اس محلے کی بنیاد رکھی تھی۔ پھر اس نے الخرج روڈ سے متصل محلے سے مشرقی جگہ خریدی۔ اس کی مانگ ستر کی دہائی کے اوائل میں شروع ہوگئی۔

محلہ معاذ بن جبل سٹریٹ سے شروع ہوا جسے کھجور کے درختوں اور "فکس" کے درختوں سے سجایا گیا تھا۔ الصانع نے خریداروں کو اپنی طرف متوجہ کرنے کے لیے زمین اور عمارت کے ولا بھی پیش کرنا شروع کر دئیے۔ اس دوران اس نے اپنے گھر کو سکول میں تبدیل کر دیا۔ اس سکول میں طلبا اور طالبات وزارت تعلیم کے زیر نگرانی تعلیم حاصل کرتے تھے۔ الصانع نے محلے کے پہلے چوک میں 20 میٹر چوڑی گلی بھی بنائی۔

اس میں بننے والی پہلی مسجد محلے کے بانی کے نام سے جانی جاتی تھی، اس کے بعد کئی مساجد تعمیر کی گئیں۔ یہاں تک کہ 80 کی دہائی میں مشہور موذن اور قاری حضرات کی موجودگی کی بنا پر اس محلے کو قاریوں کا کوارٹر کہا جانے لگا۔

الخرج روڈ پر محلے کے جنوب میں، ریفائنری کے قریب کا علاقہ "دعکنہ" کہلاتا تھا، وہاں شاہ سعود کے لیے ایک محل تھا۔ وہ محل آج بھی موجود ہے۔ 80 کی دہائی میں یہاں ’’کھیلوں کے شہر‘‘ کا آغاز کیا گیا اور "عزیزیہ مارکیٹس" بھی بنا لی گئیں۔

یاد رہے "گرین ریاض" پروجیکٹ نے پڑوس کے رہائشیوں سے جنگلات کے عمل میں حصہ لینے کی اپیل کی، کیونکہ اس منصوبے کے ذریعے 7.5 ملین سے زیادہ درخت لگانے کا منصوبہ ہے۔ سعودی 'ویژن 2030' کے تحت شہر کی سطح پر فضائی آلودگی کو 1.5 اور ہوا کے درجہ حرارت کو 2 ڈگری سیلسئس تک کم کرنے کا ہدف طے کیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں