آبنائے ہرمز میں ایرانی فوجی مشقیں، غیرملکی افواج سے علاقے سے نکلنے کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایرانی مسلح افواج نے مشترکہ فوجی مشقوں کا انعقاد کیا ہے۔ ایران کے سرکاری میڈیا کی رپورٹس کے مطابق یہ مشقیں جنہیں ذوالفقار کا نام دیا گیا تھا اور یہ آبنائے ہرمز میں کی گئیں۔

ان فوجی مشقوں میں سب میرینز کے علاوہ ایرانی ڈرونز نے بھی حصہ لیا ہے۔ ڈرونز کے ذریعے حملہ آوروں کے بارے میں معلومات کی فراہمی ممکن بنائی گئی۔

ایڈمرل حبیب اللہ سیاری نے سرکاری خبر رساں ادارے 'ارنا' کو اس سلسلے میں بتایا ہے فوجی مشقوں کا خفیہ نام ذوالفقار 1401 رکھا گیا تھا اور ان فوجی مشقوں کا اہتمام جمعہ کی رات کو خلیج اومان کی طرف سمندر میں کیا گیا۔

ایران اس علاقے میں امریکہ اور مغربی ملکوں کی فوجی موجودگی کی مخالفت کرتا ہے۔ آبنائے ہرمز کے سامنے اپنی سالانہ فوجی مشقوں کا اہتمام کرتا ہے۔ تیل کی نقل و حمل کے حوالے سے یہ راستہ کافی اہم ہے۔ اس راستے سے خام تیل کا 30 فیصد حصہ گذرتا ہے۔

ایران کی انگریزی ٹی وی چینل 'پریس ٹی وی کے مطابق ایڈمرل سیاری نے اس دوران کہا 'غیر ملکی افواج کو اس علاقے کو خالی کرنا چاہیے تاکہ علاقے کے ممالک اپنے پڑوسی ملکوں کے ساتھ مل کر علاقے میں امن اور استحکام کا ماحول پیدا کر سکیں۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں