بھارت: ائیر انڈیا پیشاب کیس، ائیرلائن کو 37 ہزار ڈالر کا جرمانہ پائلٹ کا لائسنس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

بھارتی سول ایوی ایشن نے ائیر انڈیا کے طیارے میں دوران پرواز مسافروں کے لیے محفوظ اور اطیمنان بخش انتظامات نہ ہونے کے باعث اس کے ایک پائلٹ کا لائسنس معطل کرنے کے علاوہ ائیر لائن کو 37000 امریکی ڈالر جرمانہ کر دیا ہے۔

ایوی ایشن نے ائیر انڈیا کے پائلٹ کا لائسنس تین ماہ کے لیے معطل کیا ہے۔ ایویشن کا اس سلسلے میں کہنا ہے کہ ائیر لائن اور اس کے عملے نے نیو یارک سے آنے والی پرواز کے دوران ایک خاتون پر پیشاب کر دینے والے شخص کے حوالے سے درست رپورٹنگ کے طریق کار کو بھی اختیار نہیں۔

سول ایوی ایشن نے یہ جرمانہ بھارت کے بڑے کاروباری ٹاٹا گروپ کی ملکیتی ائیر انڈیا کو کیا ہے۔ علاوہ ازیں فلائٹ سروس کے ایک ڈائریکٹر کو بھی تین لاکھ روپے جرمانہ کیا ہے۔

واضح رہے ائیر انڈیا پیشاب کیس اب بھارتی عدالت کا مشہور پیشاب کیس بن چکا ہے۔ اس سے بھارت اور اس کی ائیر لائن کے لیے بین الاقوامی سطح پر سبکی کا ماحول بن گیا ہے۔

ائیر انڈیا نے دوران پرواز جہازوں میں شراب کے حوالے سے پالیسی پر نظر ثانی کا سوچنا شروع کر دیا ہے۔ کیونکہ شراب ہی ہوائی سفر کے دوران پیشاب کیس کا سبب بنی ہے۔

تاہم عدالت میں ابھی یہ کیس زیر سماعت ہے۔ کچھ نہیں کہا جا سکتا کہ اس پیشاب کیس سے بھارت کا چہرہ کیا بن کر سامنے آتا ہے۔ پیشاب کیس کے ملزم کو سزا مل پاتی ہے یا نہیں۔ کیونکہ ملزم نے جرم کی صحت سے انکار کر دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں