’الخلاط‘ "نیٹ فلکس" نیٹ ورک کی طرف سے تیار کی جانے والی پہلی سعودی فلم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

"نیٹ فلیکس" نیٹ ورک نے فلم ’الخلاط‘ [دی مکسر] فلم اسکریننگ پلیٹ فارم کے ذریعہ تیار کردہ پہلی سعودی فلم قرار دی ہے جو آرٹ ورک، مختصر اور کمپیکٹ فلموں کی فہرست میں شامل ہے۔ اس پر ناقدین اور مداحوں کی طرف سے ملا جلا رد عمل سامنے آیا ہے۔ یہ فلم "نیٹ فکلیس" کی فہرست میں لگاتار دوسرے دن اور سوشل میڈیا میں سرفہرست ہے۔

فلم کے بارے میں بہت زیادہ تعریف سامنے آ رہی ہے وہیں اس پر تنقید بھی جاری ہے۔ اسے "IMDB پلیٹ فارم" پر سات اسٹار ملے، جب کہ اسے "cinema.com" ویب سائٹ پر 5.6 اسٹار ملے۔

رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ "نیٹ فلکس" پروڈکشن سائیکل کو دوسرے خطوں تک پھیلانے کے ساتھ ساتھ سعودی عرب میں بھی اپنی پیداوار کو وسعت دینے کا رجحان رکھتا ہے۔ یہ پلیٹ فارن دنیا کے ساتھ عربی کنٹینٹ کے لیے ایک پل بنانے کی کوشش ہے اور عرب دنیا کے تخلیقی معاشرے میں ایک اہم کردار ادا کرنے کی خواہش رکھتا ہے۔

فلم ’خلاط‘ کی تفصیلات

فلم’الخلاط یا الخلا + سماجی ماحول میں سیٹ کی گئی ایک مزاحیہ فلم ہے۔ اس کا بنیادی خیال اس سماجی فریب کے بارے میں ہے جس کا لوگوں کو جانے بغیر اس کا سامنا کرنا پڑتا ہے، کیونکہ لوگوں کو غیر متوقع طریقوں سے اور انتہائی غیر متوقع لوگوں سے دھوکہ دیا جاتا ہے۔ اس فلم کی کہانی ایسے ہی حالات کے گرد گھومتی ہے۔

فلم کی کہانی کا خلاصہ چار مختصر کہانیوں کے گرد گھومتا ہے۔ لیکن یہ تمام موضوعات ایک مرکزی خیال سے جڑے ہوئے ہیں یعنی ان کا مرکزی خیال ’سماجی دھوکہ‘ ہے۔

جب کہ فلم کے کردار خود کو مکمل طور پر غیر متوقع حالات میں پاتے ہیں اور کہانی کا آغاز اس وقت ہوتا ہے جب یہ کردار ان مسائل سے نکلنے کے لیے کوئی نہ کوئی چال یا فریب ڈھونڈنے کی کوشش کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں