افغانستان وطالبان

خواتین کے خلاف سخت پالیسیاں، امریکا نے طالبان پر نئی ویزا پابندیاں عائد کر دیں

طالبان کا خواتین کو جامعات جانے کی اجازت نہ دینا اور این جی اوز کو کام سے روکنے کے فیصلے ان پابندیوں میں شامل ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی وزیر خارجہ اینٹنی بلنکن نے افغانستان میں خواتین کے لیے ملازمت اور تعلیم کی سخت پالیسیوں کے جواب میں طالبان پر نئی ویزا پابندیاں عائد کر دیں۔

امریکی وزیر خارجہ اینٹنی بلنکن نے ایک بیان میں کہا کہ وہ طالبان کے موجودہ یا سابق ارکان، غیر ریاستی سکیورٹی گروپوں کے ارکان اور دیگر افراد پر ویزا کی پابندیاں عائد کر رہے ہیں ، یہ پابندیاں ان افراد پر لگائی گئی ہیں جن کے بارے میں خیال ہے کہ وہ افغانستان میں خواتین اور لڑکیوں کے حقوق سلب کرنے کے ذمہ دار ہیں۔

امریکی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ طالبان کی جانب سے خواتین پر لگائی جانے والی اِن پابندیوں میں جامعات جانے کی اجازت نہ دینا اور این جی اوز کے ساتھ کام سے روکنے کے فیصلے شامل ہیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ واشنگٹن اتحادی ممالک کے ساتھ مل کر کام جاری رکھے گا تاکہ طالبان پر واضح ہو سکے کہ انہیں اپنے اقدامات کی بھاری قیمت ادا کرنی پڑے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں