وزیرخارجہ بلنکن کا چین کا دورہ ملتوی، جاسوس امریکی غبارہ ’ناقابل قبول‘

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکی وزیر خارجہ انٹنی بلنکن نے جمعہ کے روز اپنی روانگی سے محض چند گھنٹے قبل اس وقت چین کا دورہ ملتوی کر دیا جب امریکی فضائی حدود میں انتہائی بلندی پر ایک چینی جاسوس غبارے کو پرواز کرتے ہوئے دیکھا گیا تھا۔

امریکی حکام نے دورہ ملتوی کیے جانے کے پس منظر سے صحافیوں کو آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ بلنکن نہیں چاہتے تھے کہ یہ واقعہ بات چیت پر حاوی ہو۔ امریکی وزیر خارجہ کا یہ دورہ پہلے سے طے شدہ تھا۔

یہ خبر اس کے فوراً بعد سامنے آئی جب چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے تصدیق کی کہ وہ چین کا غبارہ ہے۔

چینی ترجمان نے کہا کہ یہ اپنے طے شدہ راستے سے بھٹک جانے والی airship تھی جو بنیادی طور پر موسم سے متعلق تحقیق کے لیے استعمال ہوتی ہے۔

ترجمان نے کہا کہ چین کو اس غبارے کے امریکی فضائی حدود میں غیر ارادی داخلے پر افسوس ہے اور وہ اس معاملے پر امریکہ کے ساتھ بات چیت جاری رکھے گا۔

امریکی دفاعی عہدہ داروں کو بدھ کے روز شمال مغربی ریاست مونٹانا کے اوپر سے غبارہ دکھائی دیا تھا، جہاں بین البراعظمی بیلسٹک میزائلوں کی لانچنگ اور دیکھ بھال کرنے والے ایئر فورس کے تین مراکز میں سےایک واقع ہے۔

غبارہ دریافت ہونے کے بعد مونٹانا کے بلنگز ہوائی اڈے پر فضائی ٹریفک کو مختصر وقت کے لیے روک دیا گیا اور غبارے کا کھوج لگانے کے لیے امریکی جیٹ طیارے فضا میں بلند ہو گئے۔

پنٹاگان کے پریس سیکریٹری بریگیڈیئر جنرل پیٹرک رائڈر نے اس معاملے پر ایک مختصر بیان دیتے ہوئے کہا کہ یہ غبارہ فی الحال تجارتی ہوائی ٹریفک سے کافی اونچائی پر سفر کر رہا ہے اور اس سے زمین پر موجود لوگوں کو فوجی یا جسمانی خطرہ نہیں ہے۔

ایک سینئر امریکی اہلکار نے صحافیوں کو بتایا کہ ان کا خیال ہے کہ غبارے کو جاسوسی کے لیے ڈیزائن کیا گیا تھا اور وہ معلومات اکھٹی کرنے کے لیے اس غبارے کو واضح طور پر حساس مقامات پر اڑانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ امریکہ اور سوویت یونین دونوں نے سرد جنگ کے دوران اسی طرح کے جاسوس غبارے استعمال کیے تھے۔

خفیہ ایجنسی ایم آئی فائیو فیس بک کی زیرِ ملکیت ایپ انسٹاگرام کا سہارا لیتے ہوئے عوام تک ایسی معلومات پہنچائے گی جس سے وہ لا علم ہیں۔

جاسوس غبارے عام طور پر 80 ہزار سے ایک لاکھ 20 ہزار فٹ کی بلندی پر پرواز کرتے ہیں، جو کمرشل اور فوجی طیاروں کی پرواز سے کہیں زیادہ بلندی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں