ملبے کے نیچے سے: واٹس ایپ نے ترک نوجوان اور خاندان کی جان بچا لی

بوران کوبات اپنی والدہ اور دو چچاؤں کیساتھ ملبے کے نیچے پھنس گیا تو وٹس ایپ ویڈیو دوستوں کو بھیج دی تھی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سوشل میڈیا نے جنوبی ترکیہ اور شمالی شام میں آنے والے تباہ کن زلزلے سے متاثر ہونے والوں کی آوازوں اور ان کی مصائب سے دوسروں کو آگاہ کرنے میں نمایاں کردار ادا کیا ہے۔ ایک ترک نوجوان بھی سوشل میڈیا کے سبب جان بچانے میں کامیاب ہوگیا۔ اس نے اپنا فون اس وقت دیکھا جب وہ ایک ملبے کے نیچے تھا۔ اس وقت اس نے وٹس ایپ کےذریعہ ایک ویڈیو کلپ بھیج دیا۔

برطانوی اخبار "دی گارڈین" نے خبر دی ہے کہ ترک نوجوان بوران کو بات اپنی والدہ اور اپنے دو چچا کے ساتھ ملبے تلے پھنسا ہوا تھا، اسے اپنے موبائل فون کی موجودگی کا پتہ چلا اور اس نے مدد کے لیے اپنے موبائل فون کو استعمال کرنے کا فیصلہ کرلیا۔ کوبات نے ایک ویڈیو کلپ بنایا اور اپنے دوستوں کو بھیج دیا ۔ کلپ میں اس نے کہا براہ کرم، میں ہر اس شخص سے مدد مانگتا ہوں جو اس ویڈیو کو دیکھے ۔ بعد ازاں اس ویڈیو کلپ کو دیکھ کر ترکیہ کی امدادی ٹیمیں اسی کلپ کے ذریعے نوجوان کو تلاش کرنے میں کامیاب ہوسکیں اور اس کے خاندان کو بھی بچانے میں کامیاب ہوگئیں۔

یاد رہے پیر کے صبح ترکیہ کے جنوب کے علاقوں میں خوفناک زلزلہ آیا تھا۔ منگل کے روز، ترک صدر ایردوآن نے 10 ریاستوں میں 3 ماہ کے لیے ہنگامی حالت کا اعلان کردیا تھا۔ ان ریاستوں میں اضنہ، وادی یمان، دیار بکر، غازی عنتاب، ھطایی، قھرمان مرعش، کیلیس، ملاطیہ، عثمانیہ اور شانلی اورفہ شامل ہیں۔ اس وقت جمعہ کی علی الصبح تک زلزلہ میں ساڑھے 17 ہزار افراد کی اموات کی تصدیق ہو چکی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں