امریکہ روس پر حملے کے لیے شام میں داعش کو تربیت دے رہا: ماسکو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

روس کی فارن انٹیلی جنس سروس نے پیر کو اعلان کردیا ہے کہ اسے یہ اطلاع ملی ہے کہ امریکی فوج شدت پسندوں کو روس اور سابق سوویت یونین میں اہداف پر حملہ کرنے کی تربیت دے رہی ہے۔ روسی فارن انٹیلی جنس سروس جس کی سربراہی صدر ولادیمیر پوتین کے اتحادی کر رہے ہیں نے مزید کہا کہ اس کے پاس معلومات تھیں کہ داعش اور القاعدہ سے وابستہ گروپوں کے 60 عسکریت پسندوں کو بھرتی کیا گیا تھا اور وہ شام میں امریکی اڈے پر تربیت حاصل کر رہے تھے۔

ایجنسی نے ایک بیان میں کہا کہ تربیت پانے والے ان عسکریت پسندوں کو سفارت کاروں، سرکاری ملازمین، قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں اور مسلح افواج کے خلاف دہشت گردانہ حملوں کی تیاری اور انہیں انجام دینے کا کام سونپا جائے گا۔ ایجنسی نے اپنے دعویٰ کے ثبوت میں انٹیلی جنس معلومات کو شائع نہیں کیا ہے۔ تاہم خبر ایجنسی رائٹرز آزادانہ طور پر ان معلومات کی تصدیق نہیں کرسکی۔ روسی فارن انٹیلی جنس ایجنسی سوویت دور میں کے جی بی کا حصہ تھی۔ اس ایجنسی کے سربراہ سرگئی ناریشکن ہیں۔ سرگئی ناریشکن نے گزشتہ سال انقرہ میں سی آئی اے کے ڈائریکٹر ولیم برنز سے ملاقات کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں