سعودی امداد سے لدا پہلا طیارہ شامی شہر حلب پہنچ گیا

"ہم شام میں قابل اعتماد اداروں کے ساتھ کام کررہے ہیں:" کنگ سلمان سینٹر فار ریلیف اینڈ ہیومینٹیرین ایڈ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب سے شام کے لیے پہلا امدادی طیارہ آج صبح حلب کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر پہنچا۔

کنگ خالد بین الاقوامی ہوائی اڈے سے روانہ ہونے والے اس طیارے میں خوراک، ادویات اور طبی سامان کے علاوہ خیموں پر مشتمل 35 ٹن اور 322 کلوگرام وزنی اشیا‏ شامل ہیں ہے۔

شام اور ترکیہ میں زلزلے سے متاثرین کے لیے امداد کنگ سلمان سینٹر فار ریلیف اینڈ ہیومینٹیرین ایڈ کے زیرنگرانی ، سعودی ریلیف برج کے تحت بھیجی جا رہی ہے۔

کنگ سلمان سینٹر فار ریلیف اینڈ ہیومینٹیرین ایڈ نے "العربیہ" سے بات کرتے ہوئے کہا کہ "حلب تک کا فضائی پل شامی ہلال احمر کے تعاون سے چل رہا ہے،" اور "ہم شام کے اندر قابل اعتماد سول اداروں کے ساتھ مل کر کام کررہے ہیں۔"

کنگ سلمان سینٹر کے ترجمان نے العربیہ کو بتایا کہ "سعودی امداد جامع ہے ہم شام کے دور دراز اندرونی علاقوں میں فوری طور پر امداد پہنچانے کے لیے کام کر رہے ہیں۔"

سعودی عرب آئندہ دنو ں میں حلب کے لیے مزید امدادی طیارے بھیجے گا۔

واضح رہے کہ 11 امدادی ٹرکوں پر مشتمل پہلا سعودی قافلہ ہفتے کے روز شام کے سرحدی علاقوں میں پہنچا تھا جن میں 104 ٹن خوراک اور خیمے شامل تھے۔ اتوار کو مزید ٹرک امدادی سامان لے کر شام پہنچے ، جبکہ پیر کے روز، سعودی امدادی ٹرک شمال مغربی شام کے شہر جیندریس میں مصیبت زدہ لوگوں کی مدد کے لیے پہنچے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں