ایران خطے میں عدم استحکام کا سب سے بڑا عنصر ہے: امریکی فوج

ایران کی جانب سے حوثی ملیشیا کو ہتھیاروں کی ترسیل سلامتی کونسل قراردادوں کی خلاف ورزی ہے: جنرل مائیکل کوریلا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کے لیے امریکہ کے خصوصی ایلچی رابرٹ میلے نے بدھ کے روز کہا ہے کہ خطے اور روس کی جانب سے یوکرین میں ایرانی ڈرونز کے استعمال کے شواہد بڑھ رہے ہیں۔ میلے نے ٹویٹر پر مزید کہا کہ ایرانی حکومت کی جانب سے مسلسل تردید کے باوجود ایسا ہو رہا ہے۔ دری اثنا امریکی سینٹرل کمانڈ کے کمانڈر جنرل مائیکل کوریلا نے بدھ کو کہا ہے کہ ایران مشرق وسطیٰ میں عدم استحکام کا سب سے بڑا عنصر ہے۔

Advertisement

سینٹرل کمانڈ کی جانب سے ٹوئٹر پر شائع ہونے والے ایک بیان میں کوریلا نے مزید کہا کہ ایران کا حوثی ملیشیا کو ہتھیار بھیجنے کا سلسلہ یمن میں تشدد کو کم کرنے کے لیے سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی ہے ۔ ایران کا یہ عمل امن کی کوششوں کو نقصان پہنچاتا ہے۔

امریکی جنرل نے نے ان سرگرمیوں کا مقابلہ کرنے میں امریکی شراکت داروں کے کردار پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ہمارے شراکت دار اسلحہ کی ترسیل کو روکنے اور خطے میں ایران کی مذموم سرگرمیوں کا مقابلہ کرنے کے لیے ایک لازمی عنصر ہیں۔

امریکی کمانڈر کا یہ بیان اس وقت سامنے آیا ہے جب بدھ کے روز اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے کچھ یمنی افراد کو 9ماہ کے لیے اثاثے منجمد کرنے اور اور سفری پابندی کے ذریعہ نشانہ بنایا ہے۔ یہ وہ یمینی افراد ہیں جو بنیادی طور پر حوثیوں کی صفوں میں شامل ہیں۔ متفقہ منظور کی گئی قرارداد میں 12 افراد پر عائد ٹارگٹڈ جرمانے میں 15 نومبر تک توسیع کردی گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں