امریکہ زلزلہ زدہ ترکیہ کی بحالی کے لیے دیر پا مدد کرے گا بلنکن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن نے پیر کو انقرہ میں اپنے ترک ہم منصب کے ساتھ مشترکہ نیوز کانفرنس میں کہا کہ دو ہفتے قبل ملک میں آنے والے زلزلے کے بعد واشنگٹن ترکیہ کی بحالی کے عمل میں"جتنا وقت بھی لگے " مدد کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ یوکرین کی خودمختاری کی حمایت میں ترکی کی واضح آواز اہم رہی ہے۔

بلنکن نے کہا، "امریکہ اور ترکی ہر معاملے پر متفق نہیں ہیں لیکن یہ ایک ایسی شراکت داری ہے جس نے چیلنجوں کا مقابلہ کیا ہے۔"

پیر کے روز بلنکن نے ترکی میں امریکی ایجنسی برائے بین الاقوامی ترقی (یو ایس ایڈ) کی اربن سرچ اینڈ ریسکیو ٹیم کا بھی دورہ کیا اور زلزلہ سے متاثرہ ملک میں دیگر امدادی ٹیموں کی مدد کرنے میں ان کی کوششوں کا شکریہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ "یہ ایک بہت بڑی، طویل مدتی کوشش ہو گی۔ فوری تلاش اور بچاؤ کی کوششیں غیر معمولی تھیں۔ ہم اب بحالی کے مرحلے میں ہیں۔ ہم آخر کار تعمیر نو کے مرحلے تک پہنچ جائیں گے۔"

"بحالی کے عمل میں وقت اور وسائل درکار ہیں ۔ ہم ترکیہ اور شام میں متاثرین کی ہر ممکن مدد کرنے کے لیے پرعزم ہیں او میں ترکی کے لوگوں کو بتانا چاہتا ہوں کہ امریکہ ان کے ساتھ کھڑا ہے اور اس مشکل وقت سےنکلنے کے لیے جتنا وقت لگے گا وہ ان کے ساتھ رہے گا۔

پیر کے روز، وزیر خارجہ انٹونی بلنکن کے ساتھ بات چیت کے بعد ترک وزیر خارجہ میولود چاوش اوغلو نے کہا کہ امریکہ کے ساتھ تعلقات بہتر بنانے کے لیے کسی تباہی اور مشکل وقت کا انتظار کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔

اس دوران بلنکن کے ہمراہ کاووش اوغلو نے ایک نیوز کانفرنس میں بتایا کہ ترکی کے لیے پیشگی شرائط کے ساتھ امریکی ایف سولہ جنگی طیارے خریدنا ممکن نہیں ہے اور ان کا خیال ہے کہ اگر امریکی انتظامیہ فیصلہ کن موقف برقرار رکھے تو اس مسئلے کا حل نکالا جا سکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں