ترکیہ، لبنان، غزہ اور ایران میں بھی زلزلے کے مزید جھٹکے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

6 فروری کو جنوبی ترکیہ اور شمالی شام میں آنے والے تباہ کن زلزلے کے بعد سے جس میں 47,000 سے زائد افراد ہلاک ہوئے اس علاقے میں آفٹر شاکس کا سلسلہ تھم نہیں سکا ہے۔

بدھ کے روزایک امریکی زلزلہ پیما مرکز نے اعلان کیا کہ جنوبی لبنان کے صیدا کے ساحل پر 4.4 شدت کا زلزلہ آیا۔

آفٹر شاکس جاری

فلسطین کے مغربی کنارے کے شہریوں نے تصدیق کی کہ انہوں نے زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے ہیں۔

ایرانی حکام نے یہ بھی اعلان کیا کہ ملک کے جنوب مغرب میں واقع فارس گورنری کے علاقوں میں ریکٹر اسکیل پر 5.5 کی شدت کا زلزلہ آیا۔

ادھر ترکیہ کے ڈیزاسٹر مینجمنٹ ڈیپارٹمنٹ نے تصدیق کی کہ زلزلے کا اصل مرکز قہرمان مرعش میں ریکٹر اسکیل پر 4.1 ڈگری کا آفٹر شاک آیا۔

یہ جھٹکا گذشتہ پیر کی شام شام کی سرحد کے قریب جنوبی ترکیہ میں 6.3 شدت کے زلزلے کے ٹھیک 36 گھنٹے بعد محسوس کیا گیا۔ زلزلے سے خوف و ہراس پھیل گیا اور عمارتوں کو مزید نقصان پہنچا۔

اس وقت شدید زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے جس کے بعد شام، لبنان، مصر اور عراق کے بعض علاقوں کے رہائشیوں نے 5.8 ڈگری کا دوسرا جھٹکا محسوس کیا۔

ادھر ترکیہ میں حالیہ تباہ کن زلزلے سے متاثرہ عمارتوں کو تازہ جھٹکے سے مزید نقصان پہنچنے کی اطلاعات ہیں۔

شام میں سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس نے بتایا کہ شام میں زلزلے سے اب تک 6747 افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

قابل ذکر ہے کہ 6 فروری کو ترکیہ کے ساتھ ساتھ شمالی شام میں آنے والے تباہ کن زلزلے سے دونوں ممالک میں 47 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں