فرانس کی اسرائیل کو انسانی حقوق کے قوانین کے احترام کی یاد دہانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

فلسطین کے شہر نابلس میں اسرائیلی جارحیت کے دوران 11 فلسطینیوں کی ہلاکت کے واقعہ کے بعد فرانس نے فلسطینی شہریوں پر اسرائیل کی تمام پر تشدد کارروائیوں کی مذمت کی، اسرائیل کو بین الاقوامی اور شخصی قوانین کے احترام اور طاقت کے مناسب استعمال کی یاددہانی کروائی۔

فرانس نے مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں شہریوں کے تحفظ کی ضرورت پر بھی زور دیا۔

العربیہ کے نامہ نگار کے مطابق فرانس نے فریقین پر زور دیا ہے کہ وہ کسی بھی ایسی کارروائی سے گریز کریں جو تشدد کو ہوا دے، اور اس سلسلے میں 20 فروری کے سلامتی کونسل کے صدارتی اعلامیے کے مندرجات پر عملدرآمد پر زور دیا۔

فرانس نے کہا کہ"تشدد کی روک تھام کے لیے دو ریاستی حل کے حق میں سیاسی نقطہ نظر کو بحال کرنا ضروری ہے'' اور کہا کہ ''اسرائیل اور فلسطین کے لیے منصفانہ اور دیرپا امن کے حصول کا یہی واحد راستہ ہے۔''

11 فلسطینی شہید

مقبوضہ مغربی کنارے کے شمالی شہر نابلس میں بدھ کے روز اسرائیلی فوج کی جانب سے کی گئی کارروائی میں ایک کم سن لڑکے سمیت گیارہ فلسطینی شہید اور 80 سے زائد زخمی ہو گئے۔

امریکہ نے مغربی کنارے میں بڑھتی ہوئی کشیدگی پر "شدید تشویش" کا اظہار کیا۔

نیویارک میں، اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس نے خبردار کیا ہے کہ موجودہ صورت حال "حالیہ برسوں میں سب سے بڑی کشیدگی" ہے جس سے "تناؤ اپنے عروج کو پہنچ رہا ہے" اور ''فلسطین اسرائیل امن عمل" تعطل کا شکار ہوا ہے۔

گوتیرس نے زور دیا کہ "ہماری فوری ترجیح تشدد کو بڑھنے سے روکنا، تناؤ کم کرنا اور امن بحال کرنا ہونا چاہیے۔"

یورپی یونین نے بھی اس واقعے پر "شدید تشویش" کا اظہار کیا ہے۔

عرب دنیا کا ردعمل

سرکاری فلسطینی نیوز ایجنسی وفا کے مطابق، فلسطینی ایوان صدر نے "اسرائیلی جارحیت" کی مذمت کی اور تشدد کی کاروائیوں میں خطرناک اضافے کا ذمہ دار اسرائیلی حکومت کو ٹھہرایا"۔

فلسطین لبریشن آرگنائزیشن کی ایگزیکٹو کمیٹی کے سکریٹری حسین الشیخ نے نابلس میں اسرائیلی کارروائی کو "قتل عام" قرار دیتے ہوئے عالمی برادری سے "فوری مداخلت" کا مطالبہ کیا۔

عرب لیگ نے اسرائیلی کارروائی کو "نیا قتل عام" قرار دیا۔

عرب لیگ کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں قابض فوج اور انتہائی دائیں بازو کی اسرائیلی حکومت کو اس خوفناک قتل عام اور گھناؤنے جرم کا ذمہ دار ٹھہرایا گیا۔

سعودی وزارت خارجہ نے بھی اس پر تشدد کاروائی اور اسرائیلی قابض فورسز کی جانب سے بین الاقوامی قوانین کی سنگین خلاف ورزیوں کی سخت مذمت کی۔

اردن کی وزارت خارجہ کے ایک بیان میں"مقبوضہ فلسطینی شہروں میں اسرائیلی دراندازی اور حملوں کے تسلسل کی مذمت کی گئی۔''

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں