امریکا کا اسرائیل کے لیے فضائی حدود کھولنے پر عمان کے فیصلے کا خیر مقدم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکا نے جمعرات کو اسرائیل کے لیے اپنے فضائی حدود کھولنے کے عمان کے فیصلے کا خیر مقدم کیا ہے اور اسے اپنی سفارتی کوششوں کی کامیابی قرار دیا۔

وائٹ ہاؤس نے عمان کے ساتھ شراکت داری اور اس اقدام کے لیے سلطان ہیثم بن طارق کی قیادت کا بھی خصوصی شکریہ ادا کیا ہے۔

گذشتہ روز عمان نے اعلان کیا تھا کہ اس کی فضائی حدود اسرائیل کی ان تمام دو طرفہ پروازوں کے لیے کھلی رہیں گی جو شہری ہوابازی اتھارٹی کی شرائط پوری کرتے ہیں۔

امریکا کی قومی سلامتی کونسل کی ترجمان ایڈرین واٹسن نے کہا کہ یہ فیصلہ واشنگٹن کی مہینوں کی "خاموش سفارتی کوششوں" کا نتیجہ ہے۔

وائٹ ہاؤس نے کہا کہ عمان کا "تاریخی اقدام" گذشتہ سال امریکی صدر جو بائیڈن کے مشرق وسطیٰ کے دورے کے دوران شروع ہونے والے اس عمل کی تکمیل ہے جس کی ابتدا سعودی عرب کی فضائی حدود تمام سویلین طیاروں کے لیے کھولنے سے ہوئی تھی۔

تاریخ میں پہلی بار ، اسرائیل جانے اور آنے والے مسافر اب اسرائیل اور ایشیا کے درمیان براہ راست راستوں پر سفر کر سکیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں