روسی صدر پوتین کی طرف سے اپنی محبوبہ کودی گئی درجنوں پرتعیش جائیدادوں کا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
5 منٹس read

روسی اپوزیشن کے نمائندہ ذرائع ابلاغ نے صدر ولادی میرپوتین کی طرف سے ان کی مبینہ محبوبہ اور جمناسٹک کھلاڑی انتالیس سالہ الینا کبائیوا کو دی گئی پرتعیش جائیدادوں کے ایک نئے اسکینڈل کا انکشاف کیا ہے۔

سنہ 2018ء میں قائم کی گئی روسی اور انگریزی زبان میں ویب سائٹ ’پروجیکٹ‘ نے ایک تازہ رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ روسی صدر ولادیمیر پوتین نے "روس کی بے تاج ملکہ" کے لقب سے مشہور معشوقہ کی خاطر پُرتعیش زندگی کی سہولیات کی فراہمی کے لیے غیر قانونی رقم کی بھاری مقدار خرچ کی۔ یہ رپورٹ گذشتہ ہفتے ’آئرن ماسک‘ کے عنوان سے دو قسطوں میں شائع کی گئی تھی۔ تحقیقاتی رپورٹ میں اس بات کی تصدیق کی کہ گئی ہے کہ الینا کبائیوا خفیہ طور پر رئیل اسٹیٹ کے ایک ایسے گروپ کی مالک ہیں کہ جن پر لوگ رشک کرتے ہیں۔ ان کی ملکیت میں ایسی بے نامی جائیدادوں کی تعداد 22 بتائی جاتی ہےجس کی کل مالیت 120 ملین ڈالر سے زیادہ ہے۔

سابق جمناسٹک اسٹار کے پاس موجود جائیدادوں میں سوچی شہر کے پوش علاقے میں واقع آئیڈیل ہاؤس رہائشی کمپلیکس میں ایک "پینٹ ہاؤس" اپارٹمنٹ ہے جو بحیرہ اسود کے ساحل پر ایک لگژری ریزورٹ کے طور پر مشہور ہے۔ رئیل اسٹیٹ ورکرز اس بات کی تصدیق کرتے ہیں کہ یہ الینا ہی کی ملکیت ہے اور یہ روس میں سب سے بڑا فلیٹ سمجھا جاتا ہےجس کی لمبائی 124 میٹر ہے۔ صدر پوتین نے اسے 2011 میں 12 ملین ڈالر ادا کرکے خرید کیا تھا۔ اس کے بعد انہوں نے یہ جائیداد "ایلینا کبایوا" کےنام کردی جنہوں نے چار سال بعد اپنے بھتیجے میخائل شیلوموف کے نام رجسٹر کرادی تھی۔

اس 20 بیڈ روم والے اپارٹمنٹ میں جو اپنے مکینوں کو بحیرہ اسود کا ایک خوبصورت منظر پیش کرتا ہےمیں ایک سینما، ایک بلئرڈ روم، ایک آرٹ گیلری، ایک بار، ایک ورزشی ہال، ایک بیڈ روم ، ایک حمام اور ایک صحن بھی ہے۔ یہ رپورٹ ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کے مطالعے سے بھی گذری ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جاپانی طرز کی اس پرتعمش عمارت میں سابق اولمپک گولڈ میڈلسٹ کے بہت سے دوسرے پرکشش مقامات ہیں۔

روسی زبان میں اس جگہ کے نام کے طور پر PROект میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ پوتین نے اپنی محبوبہ اور اس کے تین بچوں کے لیے لکڑی سے محل کی تعمیر کا حکم دیا اور اسے "Putin's banker" کی ملکیت والی کمپنی کے لیے رجسٹر کرایا۔ یہ کمپنی 62 سالہ ارب پتی یوری کوولچوک کی ملکیت ہے جو شمالی روس میں ولدائی جھیل کے قریب پوتین کے نجی ولا کے قریب ہوں گے، جہاں وزارت دفاع نے اسے ڈرونز سے بچانے کے لیے Pantsir-S1 سسٹم نصب کر رکھاہے۔

نو ملین ڈالر سالانہ تنخواہ

"پروجیکٹ" کی تحقیقات سے اس بات کی بھی تصدیق ہوتی ہے کہ مسلمان "کابایوا" اپنے رشتہ داروں کے نام پر رجسٹرڈ بہت سی جائیدادوں کی مالک ہیں، جن میں اس کی نانی آنا زٹسپینا بھی شامل ہیں۔ اندازہ لگایا گیا ہے کہ اس کے نام پر جو کچھ ہے اس کی قیمت 12 ملین ڈالر سے زیادہ ہے۔ اس میں ماسکو کے قریب ایک اعلیٰ درجے کے علاقے میں ایک 3 منزلہ مکان بھی شامل ہے۔ یہ کبائیوا اور اس کے بچوں کے لیے ایک حقیقت ہے جن کے نام اور عمر پروجیکٹ کو معلوم ہے، لیکن اس میں اس کا ذکر نہیں کیا گیا ہے کیونکہ وہ قانونی عمر سے کم ہیں۔

اگرچہ پوتین اور کبائیوا کے تعلقات "روس میں زبان زد عام " ہیں لیکن ان کے بارے میں معلومات ایک مضبوط قلعے میں جمع ہیں۔ تاہم 2008ء میں روسیوں کو معلوم ہوا کہ ولادی میر پوتین نے دونوں کے اسکینڈل کا بھانڈہ پھوڑنے پرایک اخبار پرپابابندی لگا دی تھی۔ اس کے بعد سب کو اس تعلق کا پتا چل ہی گیا۔ پھر سب کچھ اس وقت واضح ہو گیا جب 6 سال کے بعدپ وتین نے کابائیوا کو روسی نیشنل میڈیا گروپ کا سربراہ مقرر کیا اور اس وقت اس کی سالانہ تنخواہ 9 ملین ڈالر سے زیادہ تھی۔ میڈیا مینجمنٹ کے تجربے کی کمی کے باوجود پوتین اس گروپ میں ایک اہم حصص کے مالک ہیں جو روس کا سب سے مشہور ٹیلی ویژن اسٹیشن چینل ون کا مالک ہے۔

’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کے مطابق تحقیقاتی رپورٹ پوتین کی "خفیہ مالیاتی سلطنت" اور قبرص میں ارمیرا کنسلٹنٹس کے نام سے رجسٹرڈ کمپنی سے اس کے روابط اور سابقہ شادی سے دو بیٹیوں کے باپ پوتین کے بارے میں تفصیلات کے ساتھ ختم ہوتی ہے۔انہوں نے پوٹنکا ووڈکا کی فروخت سے خفیہ طور پر فائدہ اٹھایا، جسے ملک میں سب سے زیادہ مشہور سمجھا جاتا ہے، اگرچہ کریملن ان کے نام یا تصویر کی مارکیٹنگ سے انکار کرتا ہے جبکہ پروکٹ نے تصدیق کی ہے کہ پوتین اور ان کے اتحادی تقریباً 500 ملین ڈالر "Putinka" کی تجارتی مصنوعات کی فروخت سے سالانہ کماتے ہیں.

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں