نمازیوں کی تصاویر سے روکنا منبر و محراب کے تحفظ کے لیے ہے: سعودی وزارت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسلامی امور دعوت و رہنمائی کی وزارت کے ترجمان عبداللہ العنزی نے کہا ہے کہ مساجد میں نمازیوں اور آوازوں کی تصاویر لینے اور انہیں مواصلاتی مقامات پر شائع کرنے سے روکنے کا فیصلہ اسلام کے تحفظ اور منبروں کو استحصال سے بچانے میں مملکت کے کردار کے مطابق ہے۔

انہوں نے نجی ٹی چینل سے گفتگو میں کہا کہ اس فیصلے کا مقصد غلط پیغامات کی آمد کو روکنا بھی ہے۔ یہ پیغامات لاعلمی سے ہوں ، غلطی سے ہوں یا جان بوجھ کر ہوں۔ ہر طرح کے غلط پیغاما ت کو روکنا مقصود ہے۔

العنزی نے وضاحت کی کہ وزارت کی جانب سے مساجد میں فلم بندی پر پابندی کا فیصلہ کسی بھی امام یا مبلغ پر عدم اعتماد کی وجہ سے جاری نہیں کیا گیا۔ تاہم یہ مسلمانوں کو متاثر کرنے والی کسی بھی سنگین غلطی کے پیش آنے سے احتیاط کے دائرے میں آتا ہے۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ جو کچھ ویب سائٹس پر نشر ہوتا ہے اسے کنٹرول نہیں کیا جا سکتا۔ یہ فیصلہ وزارت کے پیغام کے فریم ورک کے اندر آتا ہے تاکہ خدا کے دین اور اعتدال اور میانہ روی کو پھیلانے میں اس کے کردار کی حفاظت کی جا سکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں