امریکی فوجی عہدیدار کے دورہ شام کیخلاف ترکیہ کا امریکی سفیر کو طلب کرکے احتجاج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ترک وزارت خارجہ نے پیر کے روز انقرہ میں امریکی سفیر کو طلب کر کے اس ہفتے کے شروع میں ایک اعلیٰ امریکی فوجی عہدیدار کے شمال مشرقی شام کے دورے پر عدم اطمینان کا اظہار کردیا ۔

وزارت کے ایک ذریعے کے مطابق انقرہ نے امریکی سفیر جیف فلیک سے اس اچانک دورے کے بارے میں وضاحت طلب کی ہے جس میں امریکی جوائنٹ چیفس آف سٹاف مارک ملی نے 4 مارچ کو خطے کا دورہ کیا تھا۔ مارک ملی داعش کے دوبارہ سر اٹھانے سے روکنے کی کوششوں کا جائزہ لینے اور امریکی افواج کو حملوں سے بچانے کے لیے اقدامات کا جائزہ لینے کے لیے شام گئے۔ امریکی افواج پر ایرانی حمایت یافتہ دھڑوں کے ڈرونز کے حملوں کے خدشات بھی موجود ہیں۔

دولت اسلامیہ شام و عراق نے 2014 میں شام اور عراق میں خلافت کا اعلان کیا تھا تاہم اب اس تنظیم کے عسکریت پسند محدود ہوکر صرف چند غیر آباد علاقوں میں موجود ہیں۔ اس گروپ کے ہزاروں جنگجو حراستی مراکز میں ہیں جو کرد زیرقیادت سیریئن ڈیموکریٹک فورسز کی حفاظت میں ہیں۔ سیریئن ڈیموکریٹک فورسز شام میں امریکی اتحادی ہیں۔ امریکی حکام کا کہنا ہے کہ دولتِ اسلامیہ اب بھی ایک اہم خطرہ بن سکتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں