سعودی ولی عہد کا پولش وزیراعظم سے یوکرین جنگ اور تیل کی منڈیوں پر تبادلہ خیال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے الریاض میں پولینڈ کے وزیر اعظم متیوس موراویکی سے ملاقات کی ہے اور ان سے دونوں ملکوں کے درمیان دوطرفہ تعلقات اور باہمی دلچسپی کے امور پرتبادلہ خیال کیا ہے۔

سعودی پریس ایجنسی (ایس پی اے) کے مطابق موراویکی سرکاری دورے پر منگل کی صبح سعودی عرب کے دارالحکومت پہنچے تھے۔الریاض کے ڈپٹی گورنر شہزادہ محمد بن عبدالعزیز کی قیادت میں حکام نے شاہ خالدبین الاقوامی ہوائی اڈے پر ان کا استقبال کیا۔

ایس پی اے کی رپورٹ کے مطابق اس کے بعد سعودی ولی عہد نے الیمامہ محل میں پولینڈ کے رہ نما کا استقبال کیا اوران سے"تمام شعبوں میں دوطرفہ تعلقات کو بڑھانے کے طریقوں پر بات چیت کی ہے"۔

پولش حکومت نے اس ملاقات کے بعد جاری کردہ ایک بیان میں کہا:’’سعودی عرب تیل کی پیداوار میں دنیا کے رہ نماؤں میں سے ایک ہے اور اس طرح توانائی کے شعبے میں پولینڈ کا تزویراتی شراکت دار ہے‘‘۔

دونوں لیڈروں نے خام تیل مہیّا کرنےکے دائرہ کار اور تیل کی عالمی مارکیٹ کو مستحکم کرنے پر بھی تبادلہ خیال کیا۔پولش حکومت کے بیان کے مطابق یوکرین کا تنازع بھی بات چیت کا موضوع تھا۔پولش وزیراعظم نے’’ہرسطح پر یوکرین کے لیے غیر متزلزل حمایت‘‘جاری رکھنے کی ضرورت پر زور دیا۔

دونوں رہنماؤں نے سعودی عرب کو پولینڈ سے خوراک کی مصنوعات کی برآمد کے لیے کاروباری مواقع کے علاوہ جدید ٹیکنالوجیز اور قابل تجدید توانائی کے ذرائع کی اہمیت پربھی تبادلہ خیال کیا۔

ملاقات میں سعودی وزیرتوانائی شہزادہ عبدالعزیز بن سلمان ،وزیرمملکت شہزادہ ترکی بن عبدالعزیز، وزیرتجارت ڈاکٹر ماجدالقصبی، وزیر مملکت برائے امور خارجہ عادل الجبیر،ٹرانسپورٹ اور لاجسٹک سروسز کے وزیر صالح الجسر، وزیر برائے معیشت و منصوبہ بندی فیصل علی ابراہیم اور پولینڈ میں سعودی سفیر سعد الصالح بھی شریک تھے۔ان کے علاوہ سعودی عرب میں یوکرین کے سفیر اناطولی پیٹرینکو بھی موجود تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں