میکسیکو میں دوائی خریدنے کے لیے آئے 4 امریکی مسلح افراد کے ہاتھوں اغوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی خفیہ ادارے ’ایف بی آئی‘ نے ان مسلح افراد کے بارے میں معلومات فراہم کرنے والے کو 50,000 ڈالر کی پیشکش کی ہے جنہوں نے اتوار کو ٹیکساس کی سرحد سے 20 کلومیٹر سے بھی کم فاصلے پر واقع شمال مشرقی شہر ماتاموروس میں 4 امریکیوں کو اغوا کیا تھا اور یہ وہی لوگ ہیں جو ایک ویڈیو میں دکھائی دے رہے ہیں۔ ذیل میں العربیہ ڈاٹ نیٹ بھی اغوا کی اس واردات کی تفصیلات شائع کی ہیں اور اس خبر کےساتھ منسلک ایک ویڈیو بھی پوسٹ کی ہے۔ ایسا لگتا ہے کہ ان میں سے ایک کو سفید رنگ کی وین کے پیچھے ڈالا جا رہا ہےاور پھر ان کے تمام نشانات غائب ہو گئے۔

Advertisement

ویڈیو میں یہ بھی دیکھا جا سکتا ہے کہ اغوا کاروں میں سے کچھ نے بلٹ پروف جیکٹس جیسی بھوری جیکٹس پہن رکھی ہیں اور ان میں سے کم از کم ایک کے پاس ہتھیار ہے اور وہ اس جگہ سے گذرنے والی پرائیویٹ کاروں پر کوئی توجہ نہیں دیتا اور نہ ہی کوئی مداخلت کرتا ہے۔ انہوں نے اغوا کی دن دیہاڑے ہونے والی واردات کو روکنے کے لیے کوشش کی۔ ان میں سے ایک کے درمیان مختصر گفتگو سنی جا سکتی ہے جس نے اپنے موبائل فون سے اغوا کی فلم بندی کی۔ اغوا کی یہ واردات دو منٹ سے بھی کم وقت تک جاری رہی۔

ان چاروں کو مسلح افراد نے اچانک حملہ کیا۔ جس کے فوراً بعد وہ منی بس کے ذریعے سرحد عبور کر کے میکسیکو میں داخل ہوئے۔ جب مغوی امریکیوں نے حملہ آوروں کے سامنے ہتھیار ڈال دیےتو انھیں دوسری کار میں بٹھایا گیا جو انھیں سرحدی ریاست میں واقع شہر لے گئی۔ Tamaulipas ریاست میکسیکو میں سب سے خطرناک سڑکوں اور راستوں کے لیے مشہور ہے جس کی وجہ سے اغوا اور بھتہ خوری کی وارداتیں ہیں۔ اس کے علاوہ اس ریاست میں منشیات کی اسمگلنگ اور منظم جرائم میں سرگرم گروہ بھی آئے روز کارروائیاں کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں