ملائیشیا کے سابق وزیر اعظم محی الدین کو کرپشن الزامات کا سامنا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ملائشیا کے سابق وزیراعظم محی الدین یاسین کو کرپشن کے الزامات کا سامنا ہے۔

ملائشیا کے انسداد بدعنوانی کمیشن کے سربراہ نے بتایا کہ سابق وزیر اعظم پر جمعہ کو بدعنوانی سے متعلق فرد جرم عائد کی جائے گی۔


محی الدین، جو 2020 اور 2021 کے درمیان 17 ماہ تک وزیراعظم رہے، جمعرات کی صبح کمیشن کے دفتر میں پوچھ گچھ کے لیے پہنچے تھے۔

محی الدین اور ان کی جماعت کو گذشتہ نومبر میں ہونے والے انتخابات میں سخت مقابلے کے بعد وزیر اعظم انور ابراہیم سے ہارنے کے بعد سے بدعنوانی کی تحقیقات کا سامنا ہے۔

وزیراعظم انور نے پچھلے سال محی الدین کے منظور کردہ اربوں ڈالر کے سرکاری منصوبوں بشمول کووڈ - 19 ریلیف پروگرام، پر نظرثانی کا حکم دیا تھا۔ ان پر الزام تھا کہ انہوں نے مناسب طریقہ کار پر عمل نہیں کیا۔

محی الدین ان الزامات کی تردید کرتے ہوئے انہیں سیاسی انتقام قرار دے چکے ہیں ۔ تاہم ملائشیا کے وزیر اعظم انور نے جمعرات کو میڈیا کو بتایا کہ انہوں نے محی الدین سے متعلق بدعنوانی کی تحقیقات میں مداخلت نہیں کی۔

محی الدین کی جماعت سے تعلق رکھنے والے دو رہنماؤں پر بھی ان کے دور اقتدار میں شروع کیے گئے اقتصادی بحالی کے منصوبے میں رشوت لینے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔

انسداد بدعنوانی کمیشن نے گذشتہ ماہ محی الدین سے اسی منصوبے کے حوالے سے پوچھ گچھ کی تھی اور محی الدین کی جماعت سے تعلق رکھنے والے بینک اکاؤنٹس بھی منجمد کر دیے تھے۔

محی الدین کے خلاف الزامات سال کے وسط تک چھ ریاستوں میں ہونے والے علاقائی انتخابات سے پہلے سامنے آئے ہیں۔ توقع کی جارہی ہے کہ سابق وزیر اعظم کا اتحاد موجودہ حکومت کے لیے اس انتخاب میں مضبوط چیلنج ثابت ہوگا۔

ملائیشیا کے انسداد بدعنوانی کمیشن کے سربراہ اعظم باقی نے مزید تفصیلات نہیں بتائیں اور کہا کہ کمیشن بعد میں ایک بیان جاری کرے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں