امریکی ہوٹل کاکارنامہ؛42 برطانوی طلبہ اورعملہ کے پاسپورٹس تلف کردیے،پھرمعذرت کرلی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکاکی شمال مشرقی ریاست نیوہیمپشائر کے ایک ہوٹل کی انتظامیہ نے برطانیہ سے تعلق رکھنے والے درجنوں طلبہ سے ان کی سفری دستاویزات کے ضیاع پرمعافی مانگ لی ہے۔ہوٹل میں قیام کے دوران میں ایک اہل کار نے ان طلبہ اور عملہ کے چار ارکان کے پاسپورٹس تلف کردیے تھے۔

برطانیہ کے والسال،ویسٹ مڈلینڈزمیں واقع بار بیکن اسکول نے اپنے 42 طلبہ اور عملہ کے چار ارکان کو اسکی ٹرپ کے لیے لنکن، نیوہیمپشائرکے کنکامگس لاج میں قیام کے لیے بھیجا تھا۔بوسٹن 25 نیوز کے مطابق 19 فروری کو بیک آفس کی صفائی اور انتظامات کے دوران میں لاج کے ایک منیجر نے غلطی سے پاسپورٹ سے بھرا ایک باکس پھینک دیا تھا۔

ان پاسپورٹس کو کچرا ٹھکانے لگانے والی کمپنی نے تلف کردیا تھا اوراس نے کوڑے دان کو خالی کر دیا تھا۔کنکامگس لاج کی انتظامیہ نے کہا کہ انھوں نے فوری طور پر مہمانوں کو مطلع کیا اور اپنے مہمانوں اور ٹورآپریٹنگ کمپنی کے ساتھ مل کراس پرکام شروع کردیاتھا تاکہ کسی اطمینان بخش حل تک پہنچ سکیں۔

اس کے بعد تعلیمی سیرپرگئے اس گروپ نے نیویارک میں برطانوی سفارت خانے کا سفرکیا اور ہنگامی دستاویزات کے لیے درخواست دی تاکہ انھیں واپس انگلینڈ جانے کی اجازت دی جاسکے۔ بوسٹن 25 نیوز کے مطابق انھوں نے ابتدائی طورپر 25 فروری کے اختتامِ ہفتہ پروطن لوٹنے کا منصوبہ بنایا تھا لیکن اس کے بجائے ان کی یکم مارچ کو وطن واپسی ہوئی تھی۔

کنکامگس لاج انتظامیہ نے فیس بک پرایک بیان میں کہا کہ ’’ہم اس واقعہ کی پوری ذمے داری قبول کرتے ہیں اور اپنے مہمانوں اور کمیونٹی سے حقیقی معافی مانگتے ہیں۔ہم اس پربے حدافسوس ہے‘‘۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ’’اپنے مہمانوں اور ان کے اہل خانہ سے گہری معذرت کے علاوہ، ہم اپنی برادری سے صنعت کی بہترین صلاحیت کے مطابق نمائندگی نہ کرنے اوراس کی توقعات پر پورا نہ اُترنے پر بھی اپنی مخلصانہ معافی مانگتے ہیں‘‘۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں