’میری ماں میں نے آسکر جیت لیا‘ امریکی اداکار کے جذباتی رد عمل کی ویڈیو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

خوشی کے آنسو کیا ہوتے ہیں؟ یہ جاننا ہو تو امریکی شہرت یافتہ اداکار’کی ھوی کوان‘ کا آسکر ایوارڈ وصول کرتے وقت جذباتی منظر اس کی زندہ مثال ہے۔ ایوارڈ وصول کرتے ہوئے کوان کی آنکھیں خوشی سے چھلک پڑیں۔ اس منظرکی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پروائرل ہو رہی ہے۔

سائنس فکشن فلم Everything Everywhere All at Once میں بہترین معاون ادا کار کا کردار ادا کرنے والے ’کی ھوی کوان‘ کو 95 ویں اکیڈمی ایوارڈز کے دوران ایوارڈز سے نواز گیا۔

ادا کار کوان ویت نامی (ایشین) نژاد پہلے اداکارہیں جنہوں نے چینی نژاد امریکی لانڈری ویمن کے شوہر کا کردار نبھایا اور اس پراکیڈمی ایوارڈ جیتا۔ جب ان کوایوارڈ وصول کرنے کے لیے اسٹیج پر بلایا گیا تو سامعین کی جانب سے کھڑے ہو کر انہیں داد دی گئی۔

کوان اسٹیج پرآئے اور جذباتی انداز میں بولے"میری والدہ کی عمر 84 سال ہے اور وہ اب مجھے دیکھ رہی ہیں۔ میری ماں میں نے اب آسکرجیت لیا ہے"۔ پرجوش انداز میں بات کرتے ہوئے کوان اپنے جذبات پر قابو نہ رکھ سکے اور ان کی آنکھوں میں آنسوؤں کی لڑی جاری ہوگئی۔

انہوں نے مزید کہا کہ "میں نے اپنا سفر ایک کشتی سے شروع کیا اور ایک سال ایک پناہ گزین کیمپ میں گذارا۔ آج میں اس مقام پر ہوں۔ میں یقین نہیں کر سکتا کہ یہ میرے ساتھ ہو رہا ہے،ایسا صرف فلموں میں ہوتا ہے"۔

انہوں نے مزید کہا کہ "میں اپنی زندگی کی محبت اپنی بیوی کا ہر چیز کا مقروض ہوں جو مجھے ہر ماہ اور ہر سال بتاتی تھی کہ ایک دن میرا خواب پورا ہو گا، جو 20 سال بعد شرمندہ تعبیر ہوگیا۔"

کوان نے کہا کہ "خواب ایک ایسی چیز ہے جس پرآپ کو یقین کرنا چاہیے اور میں اپنے خواب کے حصول کی امید کھونے والا تھا"۔ عوام کو اپنا پیغام دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ’’اپنے خوابوں کی تعبیر حاصل کرنے کی کوشش کرتے رہیں۔"اس موقعے پر کوان کی اہلیہ اپنے جیون ساتھی کی اس غیرمعمولی کامیابی پرسراپا مسرت کھڑی تھی۔

آسکرجیتنا Ky Hui Kwan کے لیے ایک شاندار بحالی ہے۔ وہ پچھلی صدی کے نوے کی دہائی میں ایشیائی نسل کے اداکاروں کے لیے ہالی ووڈ میں کرداروں کی کمی کی وجہ سے اپنے اداکاری کیرئیر کو ترک کرنے پر مجبور ہو گئے تھے۔

ایکشن کامیڈی اور سائنس کے امتزاج پرمشتمل فلم Everything Everywhere All at Once میں ایک لانڈری کے مالک کی کہانی بیان کی گئی ہے، جو ٹیکس حکام کے ساتھ انتظامی مسائل سے تنگ آکر اچانک متوازی دنیاؤں کے ایک گروپ میں شامل ہو جاتی ہے۔ اس فلم کو اس سال 11 ایوارڈز کے لیے نامزد کیا گیا ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ اکیڈمی ایوارڈز کی تقریب اپنے 95ویں سیشن میں پیر کی صبح امریکی ریاست لاس اینجلس میں بین الاقوامی اسٹیج پر منعقد ہوئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں