ایران میں خیرسگالی کی صورت میں سعودی عرب کی سرمایہ کاری ممکن ہے:وزیرخزانہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کے وزیرخزانہ محمدالجدعان نے کہا ہے کہ جب تک خیرسگالی کا جذبہ برقراررہتا ہے اور اس کا بدستور مظاہرہ کیاجاتا ہے تو ایران میں اس صورت میں سعودی عرب کے لیے سرمایہ کاری کے مواقع موجود ہیں۔

انھوں نے یہ بات الریاض میں منعقدہ مالیاتی شعبے (فنانشیل سیکٹر) کی کانفرنس کے دوسرے ایڈیشن کے موقع پر کہی ہے اور ان کا یہ بیان سعودی عرب اور ایران کے درمیان چین کی ثالثی کے نتیجے میں سفارتی تعلقات کی بحالی پر اتفاق کے چند روز بعد سامنے آیا ہے۔

الجدعان نے کہا کہ جب تک معاہدے اور خودمختاری کے احترام کاعزم کیا جاتا ہے تب تک دوطرفہ تعلقات کو معمول پر لانے انھیں مستقبل میں سرمایہ کاری کے ممکنہ مواقع تک رسائی کے لیے استعمال کرنے میں انھیں کوئی رکاوٹ نظر نہیں آتی ہے۔

انھوں نے اس بات پر زوردیا کہ سعودی عرب ایران سے طے پانے والے معاہدے کے اصولوں پر کاربند ہے۔اس کا اعلان گذشتہ جمعہ کو سعودی مملکت، ایران اور چین کی طرف سے جاری کردہ سہ فریقی بیان میں کیا گیا تھا۔

سعودی وزیرخزانہ نے کہاکہ میرے خیال میں ایران میں بہت سے مواقع موجود ہیں اور جب تک خیرسگالی کا سلسلہ جاری رہے گا،ہم انھیں بہت سے مواقع مہیّا کرسکتے ہیں۔

یادرہے کہ سعودی عرب نے 2016 میں تہران میں اپنے سفارت خانہ اور مشہد میں واقع قونصل خانے پر مشتعل افرادکے حملوں کے بعد ایران کے ساتھ سفارتی تعلقات منقطع کرلیے تھے۔

سعودی عرب کے وزیرخارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے رواں ہفتے کے اوائل میں کہاتھا کہ ایران کے ساتھ سفارتی تعلقات کی بحالی کا معاہدہ 'بات چیت کے ذریعے اختلافات کوحل کرنے' کی باہمی خواہش کی تصدیق کرتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں