سعودی ویژن 2030

سعودی عرب ڈیجیٹل نظام کی تیاری میں جی 20 میں دوسرے،عالمی سطح پرچوتھے نمبرپر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب جی 20 کے رکن ممالک میں دوسرے اور ڈیجیٹل نظام کی تیاری میں عالمی سطح پرچوتھے نمبر پر ہے۔

انفارمیشن اورکمیونی کیشن ٹیکنالوجیزسے متعلق تمام معاملات کے ذمہ دار اقوام متحدہ کے خصوصی ادارے انٹرنیشنل ٹیلی کمیونی کیشن یونین (آئی ٹی یو) کی جانب سے حال ہی میں جاری کردہ ایک رپورٹ کے مطابق، یہ ایک پائیدارریگولیٹری فریم ورک کی تعمیراورڈیجیٹل معیشت کو بااختیاربنانے کے لیے ڈیجیٹل تعاون پرمبنی ریگولیشن کی طرف منتقلی میں سعودی عرب کی کامیابی کا مظہرہے۔

سعودی عرب کے کمیونی کیشنز اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کمیشن (سی آئی ٹی سی) کے گورنرڈاکٹر محمد بن سعود التمیمی نے وضاحت کی کہ سعودی ویژن 2030 نے ایک مضبوط اورمؤثرٹیلی مواصلات اورانفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے کی بنیاد رکھی ہے جس کی وجہ سے عالمی رجحانات کے مطابق ڈیجیٹل تبدیلی کے لیے ایک پُرعزم حکمتِ عملی وضع کی گئی ہے۔

انھوں نے یہ بھی کہا کہ سی آئی ٹی سی نے ٹیلی کمیونی کیشن اورآئی ٹی کے شعبے کو اعلیٰ ترین سطح پراپ گریڈ کرنے کے لیے متعدد اقدامات شروع کیے ہیں۔ان میں سرمایہ کاری کوراغب کرنےاورڈیجیٹل تبدیلی کی کوششوں کوتیزکرنے کی سمت میں ایک تزویراتی قدم کے طورپر ڈیجیٹل سسٹم کے لیے قومی اکیڈمی کا قیام بھی شامل ہے۔

سی آئی ٹی سی کے گورنر نے مزید کہا کہ کمیشن نے کوآپریٹو ریگولیشن پر توجہ مرکوزکرکے اور اپنے کاروباری اداروں میں تمام متعلقہ فریقوں کو شامل کرکے مملکت کی مسابقت میں اضافہ کیا ہے ،جس سے ظاہرہوتا ہے کہ آئی ٹی یو کی رپورٹ نے ریگولیٹنگ ایجنسیوں کو درپیش متعدد چیلنجوں کو اجاگرکیا ہے،جس میں بنیادی طورپرصلاحیت اور پائیدار ترقی کی نگرانی بھی شامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں