افغانستان میں جنگی جرائم کے ارتکاب پر سابق آسٹریلوی فوجی گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

آسٹریلیا نے افغانستان میں جنگی جرائم کے ارتکاب پر ایک سابق فوجی کو گرفتار کر لیا۔

آسٹریلوی حکام نے پیر کے روز کہا کہ انہوں نے ایک سابق فوجی کو مبینہ طور پرافغانستان کے ایک شہری کو ہلاک کرنے کے الزام میں گرفتار کیا ہے جب وہ وہاں ملکی دفاعی فورس کے ساتھ تعینات تھے۔

آسٹریلیا کی وفاقی پولیس نے ایک بیان میں کہا کہ 41 سالہ شخص پر ایک آسٹریلوی عدالت میں جنگی جرائم کے تحت قتل کی فرد جرم عائد کیے جانے کی توقع ہے، جس میں زیادہ سے زیادہ عمر قید کی سزا ہو سکتی ہے۔

2020 میں چار سالہ تحقیقات سے پتا چلا تھا کہ آسٹریلوی اسپیشل فورسز نے مبینہ طور پر افغانستان میں 39 نہتے قیدیوں اور شہریوں کو ہلاک کیا، مبینہ طور پر سینئر کمانڈوز نے جونیئر فوجیوں کو بلا دفاع قیدیوں کو مارنے پر مجبور کیا۔

رپورٹ کی سفارشات کے بعد، آسٹریلوی فوج کے 19 موجودہ اور سابق ارکان کو پھر ایک خصوصی تفتیش کار کے پاس بھیجا گیا تاکہ یہ معلوم کیا جا سکے کہ آیا مقدمہ چلانے کے لیے کافی ثبوت موجود ہیں۔

آسٹریلیا نیٹو کی زیرقیادت بین الاقوامی فورس کا حصہ تھا جس نے افغان سیکیورٹی فورسز کو تربیت دی اور 2001 میں مغربی حمایت یافتہ افواج کی جانب سے اسلام پسند عسکریت پسندوں کو اقتدار سے بے دخل کرنے کے بعد دو دہائیوں تک طالبان سے جنگ کی۔

افغانستان میں 39,000 سے زیادہ آسٹریلوی فوجیوں نے خدمات انجام دیں جن میں سے 41 ہلاک ہوگئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں