انتباہ! فون سکرین کی سطح پر مہلک بیکٹیریا ہوسکتے

پیٹ کی خرابی کا مطالعہ ٹچ سکرین الیکٹرانک آلات کی سطحوں پر چھپی 'غیر مرئی زندگی' کو ظاہر کررہا:رپورٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ موبائل فون کی سکرینوں کی سطحوں پر چھپے ہوئے غیر مرئی جراثیم میں انسانی فضلے اور کاکروچ کے بیکٹیریا بھی شامل ہیں۔ برطانوی "ڈیلی میل" کی طرف سے شائع رپورٹ کے مطابق صارف کے جسم میں منتقل ہونے والے نقصان دہ جرثوموں کی تحقیق میں 100 فیصد سمارٹ فون سکرینوں پر بیکٹیریا Escherichia coli اور Streptococcus faecalis پائے گئے۔

’’بیسیلس سیریس‘‘ اور نمونیا کا باعث بننے والا ’’سٹافیلو کوکس آریئس‘‘ بھی 10 فونز سے لیے گئے ہر 20 سویبس میں سے ایک میں پایا گیا۔ سویبس میں ’’ سالمونیلا‘‘ کا کوئی نشان نہیں تھا۔ نصف سویبس میں بیکٹیریا ’’ پی۔ ایروگی نوزا‘‘ بھی پایا گیا۔ یہ بیکٹیریا عام طور پر کاکروچ کے فضلے میں پایا جاتا ہے۔

انسانی اخراج اور کاکروچ کا اخراج

کمپنی ’’SellCell‘‘ کے آپریشنز کی ڈائریکٹر سارہ میک کانومی کے کیے گئے اس مطالعے کا مقصد یہ معلوم کرنا تھا کہ سیل فون کی سکرینوں پر کتنے نقصان دہ بیکٹیریا موجود ہیں اور کس قسم کے بیکٹیریا سب سے زیادہ عام ہیں۔ رپورٹ کے نتائج چونکا دینے والے تھے کہ بہت سے بیکٹیریا انسانی فضلے سے بنتے ہیں۔ یہ مطالعہ لوگوں کے لیے اپنے موبائل فون کو زیادہ کثرت سے اور اچھی طرح صاف کرنے کی ضرورت کو اجاگر کرتا ہے۔ یہاں شاید سب سے اہم بات ’’ P. aeruginosa‘‘ کی موجودگی ہے ۔ یہ بیکٹیریا براہ راست کاکروچ کے فضلے سے نکلتا ہے۔

جراثیم کی 20 کالونیاں

اس تحقیق میں 22 سے 62 سال کی عمر کے درمیان چھ خواتین اور چار مردوں کی نجی فون اسکرینوں کا تجربہ کیا گیا۔ Streptococcus faecalis اور Enterococcus کی کل 20 کالونیاں، جو انسانوں اور جانوروں دونوں کے پیٹ اور آنتوں میں بنتی ہیں، جانچ کی گئی اسکرینوں پر پائی گئیں۔ یہ کالونیاں سانس کے انفیکشن، جلد کے انفیکشن اور یہاں تک کہ فوڈ پوائزننگ کے خطرے کی نمائندگی کر سکتی ہیں۔

باتھ رومز

فون کے ٹوائلٹ میں داخل ہونے کے لیے کچھ جراثیم کو ذمہ دار ٹھہرایا گیا ہے جیسا کہ محققین نے مشورہ دیا ہے کہ ٹوائلٹ کی صفائی کرتے وقت صرف پانچ منٹ کے اندر اندر بیکٹیریا ہوا میں منتقل ہو سکتے ہیں۔ جس سے ان کے گرنے اور فون کی سطح سے چپکنے کا امکان بڑھ جاتا ہے۔ ۔ اس کے بعد صارف اپنے فون پر بیکٹیریا کو باتھ روم سے باہر اور گھر کے باقی حصوں میں لے جاتا ہے جہاں بیماری کے پھیلنے کے امکانات بڑھ سکتے ہیں۔

ان جراثیم میں خطرناک جراثیم اسہال، قے، سانس کے انفیکشن اور یہاں تک کہ پیشاب کی نالی اور خون کے بہاؤ کے انفیکشن کا سبب بن سکتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں