بائیڈن کا ریپبلکننز کے پیش کردہ قانون کے خلاف پہلا ویٹو

اس قانون سے ریٹائرمنٹ کی بچت خطرے میں پڑ جائے گی: امریکی صدر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

امریکی صدر جو بائیڈن نے پیر کے روز اپنے دور میں پہلی مرتبہ صدارتی ویٹو کا استعمال ریپبلکنز کی جانب سے پیش کردہ ایک قانون کی تجویز کے خلاف کیا ہے۔ یہ مجوزہ قانون ماحولیات اور سماجی معیارات اور گڈ گورننس کو مدنظر رکھتے ہوئے سرمایہ کاری کرنے کے لیے پنشن فنڈز کی صلاحیت کو محدود کرتا ہے۔ .

بائیڈن نے ٹویٹ کیا کہ قانون سازی خطرے کے عوامل پر غور کرنے کو غیر قانونی بنا کر ریٹائرمنٹ کی بچت کو خطرے میں ڈال دے گی جس کی ریپبلکن پارٹی کا انتہائی دایاں بازو مخالفت کرتا ہے۔ ریپبلکنز نام نہاد ذمہ دارانہ سرمایہ کاری (اے ایس جی) کو سیاسی طور پر دخل اندازی سمجھتے ہیں۔

بائیڈن نے زور دیا کہ سیونگ پلان مینیجر کو محنت سے کمائی گئی بچتوں کی حفاظت کرنے کے قابل ہونا چاہیے چاہے نمائندہ مارجوری ٹیلر گرین اسے پسند کرے یا نہ کرے۔ وہ کانگریس کے ریپبلکن رکن پارلیمنٹ کا حوالہ دے رہے تھے۔ ٹیلر گرین انتہائی دائیں بازو کی نمایاں شخصیات میں سے ایک ہے۔

ریپبلکنز نے قانون سازی کے لیے ایوان نمائندگان میں اپنی اکثریت کا فائدہ اٹھایا تھا۔ اگرچہ ڈیموکریٹس کو سینیٹ میں معمولی اکثریت حاصل تھی تاہم تین ارکان کی غیر موجودگی اور دو کے ریپبلکنز سے الحاق کی وجہ سے قانون سازی کی منظوری ہونا اور اسے صدر کے حوالے کرنا ممکن تھا۔

قانون سازی کے حامیوں کا کہنا ہے کہ ’’ذمہ دارانہ سرمایہ کاری‘‘ کے عوامل کا تعین بائیں بازو کے سماجی تحفظات سے ہوتا ہے ۔ ان سماجی تحفظات کو مالیاتی لین دین کا حصہ نہیں ہونا چاہیے۔

نومبر میں بائیڈن انتظامیہ کے لیبر ڈیپارٹمنٹ نے ایک ایسے اقدام کو دوبارہ فعال کیا جس نے سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ کے اس اقدام کو منسوخ کر دیا جو ایسے فنڈ مینیجرز کو سزا دیتا ہے جو اپنے فیصلے کرتے وقت موسمیاتی تبدیلی کو مدنظر رکھتے ہیں۔

اور ڈیموکریٹس نے اس بات پر زور دیا کہ سیاسی نقطہ نظر اس وقت تک غیر جانبدار ہے کہ کس طرح ذمہ دارانہ سرمایہ کاری کے عوامل کو مدنظر رکھا جائے جب تک کہ سرمایہ کاری کے فنڈز اپنے فائدہ اٹھانے والوں کے لیے اپنی ذمہ داریوں کو پورا کرتے رہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں