چین اور امریکہ میں کڑی سرد جنگ شروع ہو سکتی: ہنری کسنجر کا انتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

چین اور امریکہ کے درمیان مسلسل بڑھتی ہوئی کشیدگی کے تناظر میں سابق امریکی وزیر خارجہ ہنری کسنجر نے دنیا میں دوسری سرد جنگ شروع ہونے کے خطرے سے خبردار کردیا۔ ان کے مطابق یہ دوسری سرد جنگ پہلی سے بھی زیادہ خطرناک ہوسکتی ہے۔

ایک ہسپانوی اخبار کو انٹرویو دیتے ہوئے ہنری کسنجر نے کہا کہ بیجنگ اور واشنگٹن کے درمیان ایک نئی سرد جنگ شروع ہو سکتی ہے۔ سابق امریکی وزیر خارجہ نے کہا دونوں ملکوں کے پاس ایک جیسے معاشی وسائل ہیں جو پہلی سرد جنگ کے دوران نہیں تھے۔

یاد رہے پہلی سرد جنگ 1940 کی دہائی کے وسط سے شروع ہوکر 1990 کی دہائی کے اوائل تک امریکہ اور سوویت یونین کے درمیان جاری رہی تھی۔

ہنری کسنجر نے کہا کہ دو بڑی اقتصادی طاقتیں اب حریفوں میں بدل چکی ہیں۔ چین کی جانب سے مغرب کی طرف رخ کرنے کا انتظار کرنا جائز نہیں ہے۔ چین کے وزیر خارجہ وانگ یی نے پہلے ہی خبردار کیا تھا کہ ان کے ملک اور امریکہ کے درمیان ’’نئی سرد جنگ‘‘ کا آغاز پوری دنیا کے لیے تباہی کا باعث ہوگا۔

واضح رہے کہ کسنجر نے اس سے قبل بھی ’’چین امریکی تنازع‘‘ کی سنگینی کے متعلق خبردار کیا تھا۔ انہوں نے کہا تھا کہ یہ تنازع انسانیت کو درپیش سب سے بڑے چیلنج میں تبدیل ہو سکتا ہے۔

یاد رہے تائیوان کے جزیرہ کا معاملہ ہو ، غبارے یا ٹک ٹاک کے ذریعے جاسوسی کا معاملہ ہو چین اور روس کے مابین بڑھتے تعلقات پر امریکی بے چینی میں اضافہ ہو ۔ حال ہی میں چین اور امریکہ کے درمیان کشیدگی بڑھی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں