شرمناک ویڈیو: بھارتی پارلیمنٹ کے اجلاس میں رکن فحش فلم دیکھتے پکڑا گیا

سیشن ختم ہونے پر سیاستدان جاداب لال ناتھ بغیر کسی جوابدہی کے چلا گیا، ملک بھر میں بڑے پیمانے پر غم و غصہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بھارت میں رکن پارلیمنٹ کی شرمناک ویڈیو سامنے آگئی اور پورے ملک میں غم و غصہ کی لہردوڑ گئی ہے۔ ایسا لگتا ہے کہ بھارت میں یہ عوامی غصہ جلدی ٹھنڈا نہیں ہوگا۔

لوگوں کو برہم کرنے والی ویڈیو حکمران جماعت کے رکن پارلیمان جاداب لال ناتھ کی ہے۔ شرمناک ویڈیو میں لال ناتھ کو پارلیمنٹ میں فحش فلم دیکھتے پکڑا گیا تھا۔ تاہم ابھی تک اس کو اپنے اس فعل پر کسی بھی جانب سے جوابدہ نہیں ٹھہرایا گیا جس نے پورے ملک میں مختلف حلقوں کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔ لوگوں کی بڑی تعداد نے لال ناتھ کو فوری سزا دینے کا مطالبہ کردیا ہے۔

کہانی سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے پھیلائی گئی ایک ویڈیو سے شروع ہوئی جس میں مذکور رکن پارلیمنٹ کو دیکھا گیا کہ وہ ریاستی بجٹ پر بحث کرنے والے پارلیمنٹ کے ایک سرکاری اجلاس کے دوران فحش فلم دیکھ رہا ہے۔

جس چیز نے معاملات کو مزید خراب کیا وہ یہ تھا کہ وہ سیاستدان جواب دہی کے بغیر ہی سیشن ختم ہونے کے بعد پارلیمنٹ چھوڑ کر چلا گیا اور اس کے بعد بھی اسے حکام نے طلب نہیں کیا۔ انڈیا ٹوڈے کے مطابق سوشل میڈیا پر اٹھنے والی آوازیں لال ناتھ کی گرفتاری اور معاملہ کی تحقیقات کا مطالبہ کر رہی ہیں۔

واضح رہے اس واقعہ نے ملک میں شدید غم و غصہ کی لہر دوڑا دی ہے۔ اپوزیشن نے بھی مطالبہ کردیا ہے کہ اس رکن پارلیمان کو سخت ترین سزا دی جائے۔

اپوزیشن لیڈر انیمیش دیپرما نے کہا ہے کہ اس رکن پارلیمنٹ نے یہ حرکت کرکے ملک میں اپنے جیسے تمام عہدیداروں کو بدنام کردیا ہے۔ انہوں نے کہا ایسے اجتماعات میں موبائل فون کا استعمال مکمل طور پر ممنوع ہے۔

اس کے باوجود پارلیمنٹ کے سپیکر بسوابندو سین نے تصدیق کی کہ انہیں ابھی تک اس معاملے پر کوئی شکایت موصول نہیں ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ یہ معاملہ سوشل میڈیا پر پھیل چکا ہے اور وہ سرکاری شکایت کے بغیر کوئی تبصرہ نہیں کر سکتے۔ شکایت موصول ہونے کی صورت میں وہ اس معاملہ کی تحقیقات کریں گے اور قواعد کے مطابق کارروائی کی جائے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں