متحدہ عرب امارات نے افغان زلزلہ متاثرین کے لیے 38 ٹن امدادی سامان بھیج دیا۔

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات نے جمعہ کو افغانستان میں حالیہ زلزلے سے متاثرہ خاندانوں کے لیے 38 ٹن طبی امداد اور خوراک کا سامان بھیجا ہے۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی "وام" نے جمعہ کی شام کو رپورٹ کیا کہ "یہ قدرتی آفات سے متاثرہ ممالک کو فوری امداد فراہم کرنے اور خواتین، بچوں اور معمر افراد جیسے کمزور گروہوں کے لیے انسانی امداد کو بڑھانے کی متحدہ عرب امارات کی پائیدار کوششوں کا حصہ ہے۔"

گذشتہ ہفتے افغانستان اور پاکستان میں 6.5 شدت کے زلزلے کے نتیجے میں کم از کم 13 افراد ہلاک اور 90 سے زائد زخمی ہوئے تھے۔

امریکی جیولوجیکل سروے نے کہا کہ زلزلے کا مرکز ہندوکش کے پہاڑوں میں تھا، جو نسبتا کم آبادی والے شمال مشرقی افغان صوبے بدخشاں میں، جرم گاؤں سے 40 کلومیٹر (25 میل) جنوب مشرق میں، 187 کلومیٹر (116 میل) کی کافی گہرائی میں تھا۔

یورپی-میڈیٹیرینین سیسمولوجیکل سینٹر کے مطابق، زلزلے کو پاکستان، بھارت، ازبکستان، تاجکستان، قازقستان، کرغزستان، افغانستان اور ترکمانستان کے تقریباً 285 ملین لوگوں نے 1,000 کلومیٹر (621 میل) سے زیادہ چوڑے علاقے میں محسوس کیا۔

"وام" کے مطابق، گزشتہ سال جون میں، یو اے ای نے جنوب مشرقی افغانستان میں خوست میں آنے والے ایک اور زلزلے کے بعد، 75 بستروں کے ساتھ 1,000 مربع میٹر کا فیلڈ ہسپتال بنایا تھا جو روزانہ 200 مریضوں کا علاج کر سکتا ہے۔

2021 سے 2022 تک، متحدہ عرب امارات نے کل 28 امدادی طیارے بھیجے جن میں 623 ٹن طبی اور خوراک کا سامان تھا۔

اس امداد سے 850,000 خواتین اور بچوں سمیت تقریباً 1.1 ملین افراد مستفید ہوئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں