ترک صدر ایردوآن کی ان کے سیاسی حریف سے ملاقات پر امریکہ پر تنقید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ترک صدر رجب طیب ایردوآن نے کہا ہے کہ ترکیہ کے آئندہ انتخابات کے نتائج "امریکہ کے لیے ایک سبق" ہونے چاہئیں۔
یہ ان کی اگلی مدت کے لیے انتخابی مہم کے دوران اب تک کا سب سے واضح مغرب مخالف بیان ہے جو انہوں نے ایک قوم پرست گروپ سے خطاب کے دوران دیا۔

"ہمیں 14 مئی کے انتخابات میں امریکہ کو سبق سکھانا ہوگا،" سرکاری زیر انتظام اناضول ایجنسی نے اتوار کو استنبول میں ایردوآن کا حوالہ دیتے ہوئے کہا۔

انہوں نے یہ بات امریکی سفیر جیف فلیک کے ان کے اہم انتخابی حریف کمال کلیچ دار اوغلو سے ملاقات پر تنقید کے دوران کی۔

ایردوآن نے قوم پرست نوجوانوں کے ایک گروپ سے خطاب کے دوران امریکی سفیر پر تنقید کرتے ہوئے کہا۔"آپ ایک سفیر ہیں"۔۔۔ "آپ اب سے صدر سے ملاقات کیسے کریں گے؟ "
"ایردوآن کا دروازہ "ان کے لیے بند کر دیا گیا ہے۔" انہوں نے مزید کہا۔

امریکی سفارتخانے نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ امریکی سفیر نے 29 مارچ کو انقرہ میں قلیچ دار اوغلو سے "ترک سیاسی جماعتوں کے ساتھ باہمی دلچسپی کے امور پر بات چیت جاری رکھنے کے ایک حصے کے طور پر ملاقات کی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں