وائٹ ہاؤس کااوپیک کے تیل پیداوارمیں کٹوتی کے اقدام سے عدم اتفاق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

وائٹ ہاؤس کےایک عہدہ دار نے بتایا ہے کہ اتوارکو اوپیک نے تیل کی پیداوار میں کمی کے اعلان سے قبل امریکی حکام کو اپنے فیصلہ سے مطلع کردیاتھا لیکن اس عہدہ دار کا کہنا ہے کہ وہ نہیں جانتے کہ یہ حیران کن فیصلہ کیوں کیا گیا ہے۔

وائٹ ہاؤس کی قومی سلامتی کونسل میں تزویراتی ابلاغیات کے رابطہ کارجان کربی نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وہ اس فیصلہ کے بارے میں کوئی تبصرہ کرنے سے قاصر ہیں۔

ان خبروں کے بارے میں پوچھے جانے پر کہ تیل کی یومیہ پیداوار میں کٹوتی کا فیصلہ پیٹرولیم کے تزویراتی ذخائرکوفوری طور پربھرنے میں امریکاکی ناکامی سے متعلق ہے،جان کربی نے کہا:’’میں صرف اتنا کہوں گا کہ میں یہ قیاس آرائی بھی نہیں کر سکتا کہ یہ فیصلہ کیوں کیا گیا ہے‘‘۔

کربی نے کہا کہ مارکیٹ کی غیریقینی صورت حال کے پیش نظراس موقع پرتیل کی پیداوار میں کٹوتی مناسب نہیں ہے اورامریکا نے یہ بات اوپیک پرواضح کردی ہے۔

انھوں نے کہا کہ وائٹ ہاؤس کی توجہ صارفین پر ہے نہ کہ بیرل پر اور وہ تیل پیداکنندگان کے ساتھ مل کر کام کرتا رہے گا اور صارفین کے لیے کم قیمتوں کو یقینی بنانے کی غرض سے کام کرتا رہے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں