ٹرمپ کے خلاف پہلا فوج داری الزام کیا ہوسکتا ہے؟ پریس رپورٹ میں انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو نیویارک کی عدالت میں ایک فوج داری الزام کا سامنا ہے۔ ’سی بی ایس‘ نیوز کو باخبر ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ اس معاملے سے واقف ایک شخص کا کہنا ہے کہ ٹرمپ پر پہلے درجے میں کاروباری ریکارڈ کو جھوٹا بنانے کا الزام ہے جو نیویارک ریاست میں ایک جرم ہے۔

یہ الزام مبینہ طور پر 2016 میں اداکارہ سٹورمی ڈینیئلز کو ٹرمپ کے ساتھ مبینہ تعلقات کے حوالے سے خاموشی خریدنے کے لیے ادا کی گئی رقم کا ہے۔

نیویارک کی گرینڈ جیوری کا فرد جرم ابھی تک خفیہ ہے۔ اس لیے الزام کی تفصیلات فوری طور پر دستیاب نہیں ہیں۔

توقع ہے کہ سابق صدر منگل کو جج جوآن مرچن کے سامنے پیش ہوں گے، اس معاملے سے واقف دو ذرائع نے سی بی ایس نیوز کو بتایا اس وقت انہیں فرد جرم پڑھ کر سنائی جائے گی۔

مجموعی طور پر ٹرمپ پر 30 مختلف فرد جرم عاید ہوں گی جس کی تصدیق میڈیا نیٹ ورک کے دو ذرائع سے ہوئی ہے۔

درایں اثنا سابق امریکی صدر نے کہا ہےکہ جو کچھ ہو رہا ہے وہ "سیاسی ظلم و ستم اور تاریخ کی اعلیٰ ترین سطح پر انتخابی مداخلت" ہے۔ انہوں نے ڈیموکریٹس پر الزام لگایا کہ ہمارے عدالتی نظام کو مسلح کیا جا رہا ہے تاکہ سیاسی مخالف کو سزا دی جا سکے۔

ٹرمپ کے وکلاء جوزف ٹاکوپینا اور سوسن نکیلس نے ایک بیان میں کہا کہ سابق صدر نے "کوئی جرم نہیں کیا"۔ انہوں نے عدالت میں اس سیاسی استغاثہ کا بھرپور طریقے سے مقابلہ کرنے کا عزم کیا۔ استغاثہ نے نیکلس اور ٹاکوبینا کو ٹرمپ کے خلاف الزامات سے آگاہ نہیں کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں