اٹارنی جنرل کا فرد جرم لیک کرنا افسوسناک ہے: ٹرمپ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

نیویارک کی مین ہٹن عدالت میں ان کی پیشی سے چند گھنٹے قبل امریکہ میں ایک تاریخی نظیر پیش کرتے ہوئے سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے خلاف فرد جرم کو افسوسناک قرار دے دیا۔

انہوں نے پلیٹ فارم "سوشل ٹروتھ" کے اپنے اکاؤنٹ پر پوسٹ کیے گئے ایک تبصرے میں کہا آج منگل کو مین ہٹن کے اٹارنی جنرل ایلون بریگ نے میرے خلاف قابل رحم فرد جرم کے حوالے سے غیر قانونی طور پر معلومات کو لیک کیا ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ میں رپورٹر کو جانتا ہوں اور وہ مجھے بھی جانتا ہے۔ ممکنہ طور پر ٹرمپ نے اس صحافی کا حوالہ دیا جس نے یہ بتایا تھا کہ سابق صدر کو 34 الزامات کا سامنا ہے۔

ٹرمپ نے مزید کہا کہ اگر پبلک پراسیکیوٹر اب اپنے پیشہ ورانہ ریکارڈ کو سفید کرنا چاہتا ہے تو اسے خود اپنے آپ کی مذمت کرنا چاہیے کیونکہ اس نے قانون کی خلاف ورزی کی ہے۔ ٹرمپ نے کہا پبلک پراسیکیوٹر اپنے عدالتی ریکارڈ کو ناکامی سے داغ دار کرے گا جیسا کہ ٹرمپ سے نفرت کرنے والی اس کی بیوی کو بھی ناکامی کا سامنا کرنا پڑے گا۔

پیر کی شام ٹرمپ نے بریگ کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا تھا اور 33 الزامات کی معلومات لیک کرنے کے حوالے سے کہا تھا کہ بریگ کو مستعفی ہو جانا چاہیے۔

اس میں کوئی شک نہیں ڈیموکریٹک پارٹی سے تعلق رکھنے والے ایلون بریگ کا نام امریکہ کی عدالتی تاریخ میں ایک منفرد حیثیت رکھتا ہے کہ وہ پہلے پراسیکیوٹر ہیں جس نے کسی امریکی صدر کے خلاف فوجداری الزامات دائر کیے ہیں۔

یاد رہے ٹرمپ فلوریڈا سے نیو یارک سٹی پہنچ گئے ہیں جہاں آج عدالت کی جانب سے ان پر فرد جرم عائد کی جائے گی۔ اس طرح وہ پہلے سابق امریکی صدر بن گئے ہیں جنہیں فوجداری الزامات کا سامنا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں