ایران میں زہر کا عفریت ایک بار پھر سامنے، 20 طالبات متاثر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

ایران میں تین ہفتوں کی "نوروز" کی تعطیلات کے اختتام کے بعد، طالبات کے اسکولوں پر جاری حالیہ زہریلی گیس حملوں کا سلسلہ دوبارہ شروع ہوگیا۔

سرکاری اسنا نیوز ایجنسی کے مطابق، زیر دینے کے ایک نئے واقعے میں مزید 20 طالبات کو کمزوری اور سانس لینے میں تکلیف کے بعد ہسپتال لے جایا گیا۔

ایمرجنسی آرگنائزیشن نے بتایا کہ واقعہ شمال مغربی شہر تبریز کے قصبے باغمیشہ کے ایک اسکول میں پیش آیا جہاں 20 طالبات کو سانس لینے میں دشواری کی اطلاع ملی تھی۔

تبریز میں ایمرجنسی کے سربراہ اصغر جعفری نے تصدیق کی کہ یہ واقعہ زہر سے حملے کا ہے۔

1,000 سے زیادہ

بین الاقوامی خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق گزشتہ نومبر سے اب تک ایک ہزار سے زائد اسکول کی لڑکیاں زہر خورانی کے بعد بیمار ہو چکی ہیں۔

زہر کی یہ لہر گذشتہ نومبر میں قم شہر سے شروع ہوئی تھی جہاں تقریباً 800 طالبات زہریلی گیس میں سانس لینے کے نتیجے میں کمزوری، آنتوں میں درد اور بے ہوش ہونے کا انکشاف ہوا۔

بعد میں ملک بھر کے کئی اسکولوں کے ساتھ مختلف علاقوں میں اسی طرح کے کیسز سامنے آئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں