باخموت کا مغربی حصہ روس کے کنٹرول میں، یوکرین کو باخموت میں بھی مشکلات

روسی افواج نے یوکرینی نیول گارڈ کو نشانہ بنایا، 50 یوکرینی فوجی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

یوکرین میں روسی فوجی کارروائیاں جاری ہیں۔ حالیہ پیش رفت میں یوکرین کی فوج نے اعلان کیا کہ روس نے باخموت کے علاقوں میں حکمت عملی سے کامیابی حاصل کرلی لیکن اسے بھاری نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

یوکرین نے جمعہ کو کہا کہ روس اپنی تمام تر کوششیں ملک کے مشرق میں واقع باخموت شہر کو کنٹرول کرنے پر مرکوز کر رہا ہے۔ یوکرین نے صورت حال کو "مشکل" قرار دے دیا۔ تاہم یوکرین نے کہا کہ وہ روسی افواج کی عددی برتری کے باوجود ثابت قدم ہے۔ .

ایسٹرن ملٹری کمانڈ کے ترجمان سرہی چرواٹی نے ’’رائٹرز‘‘ کو بتایا کہ "یوکرین کو باخموت کی صورت حال پر کنٹرول حاصل ہے اور وہ روسی عزائم سے آگاہ ہے۔ ماسکو نے کچھ مقامات پر حکمت عملی سے کامیابی حاصل کی ہے لیکن وہ اس کی بھاری قیمت چکا رہا ہے۔

اسی تناظر میں روسی محکمہ ہوابازی نے جمعہ کو صوبہ ’’خیرسن‘‘ میں یوکرینی نیول گارڈ کے اڈے کو نشانہ بنایا ۔ اس حملے میں لگ بھگ 50 یوکرینی فوجی ہلاک ہوگئے۔

روسی ڈینیپر ملٹری فارمیشن کے انفارمیشن سنٹر کے سربراہ آندرے رولیو نے مقامی میڈیا کو بتایا کہ ڈینیپر آرٹلری کے سپاہیوں نے ساحلی قصبوں بیریگووائے اور نیکولسکوئے میں یوکرینی فوج کے دو موبائل آرٹلری ڈویژنوں کو تباہ کر دیا۔

برطانیہ کی وزارت دفاع نے جمعہ کے روز کہا کہ روس نے دریائے باخموتکا کے مغربی کنارے پر قبضہ کر لیا ہے۔ جس سے یوکرین میں سپلائی کے ایک اہم راستے کو خطرہ لاحق ہو گیا ہے۔ تباہ شدہ مشرقی شہر باخموتکا پر قبضہ کر لیا گیا ہے۔

برطانوی وزارت دفاع نے ٹویٹر پر ایک سرکلر میں کہا کہ روس نے مزید کامیابیاں حاصل کی ہیں اور اب شاید شہر کے مرکز میں پیش قدمی کر لی ہے۔ شہر کے مغرب میں یوکرین کے اہم سپلائی روٹ 0506 کو شدید خطرہ لاحق ہے۔

جمعرات کی شام یوکرینی اور روسی افواج کے درمیان تباہ حال مشرقی یوکرین کے شہر باخموت میں جھڑپ ہوئی۔ روس کے زیر قبضہ علاقوں پر یوکرینی توپ خانے کی بمباری میں سات شہری مارے گئے۔

باخموت کے بالکل مضافات میں خندقوں میں موجود یوکرینی فوجیوں نے کہا کہ موسم صاف ہونے پر وہ ایک طویل انتظار کے بعد جوابی حملہ کرنے کے لیے تیار ہیں۔ دوسرے مقامات پر دوسرے یوکرینی بھرتی ہونے والے نئے جنگی مشنوں کے لیے تربیت کر رہے ہیں۔

مشرقی ڈونیٹسک خطے کے آخری شہری مراکز میں سے ایک باخموت کے لیے مہینوں سے لڑائی جاری ہے۔ یہ لڑائی ابھی تک روسی جنگ کی سب سے خونریز لڑائیوں میں سے ایک ثابت ہوئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں