سوڈان میں تابکار یورینیم پکڑے جانے کے اعلان نے تنازع کھڑا کردیا

لوگوں کی بڑی تعداد نے حیرانی اور طنز سے ملے جلے تبصرے شروع کردئیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سوڈانی پولیس کی جانب سے تابکار یورینیم کو قبضے میں لینے کے اعلان پر سوڈان میں سوشل میڈیا پر حیرانی اور طنز سے ملے جلے تبصرے سامنے آ رہے ہیں۔

سوڈانی پولیس کے پریس آفس نے ہفتہ کو اعلان کیا تھا کہ ام درمان میں انسداد منشیات کے ایجنٹوں نے یورینیم دھات والی گاڑی پکڑی ہے۔ اس اعلان کے سامنے آتے ہی ملک بھر میں حیرانی کی لہر دوڑ گئی۔

پولیس نے بتایا کہ محکمہ انسداد منشیات کے اہلکاروں نے خرطوم آنے والی گاڑی کے ڈرائیور کو شک کی بنیاد پر ام درمان کے مغربی دروازے سے گرفتار کیا۔ تلاشی کے بعد انہیں پیشہ ورانہ انداز میں گاڑی کے اندر چھپائی گئی یورینیم کی مقدار ملی تو وہ فوری طور پر ملزمان کو تفتیش کے لیے لے گئے تاکہ اس عجیب و غریب واقعے کے حالات سے پردہ اٹھایا جا سکے۔

اس اعلان پر مختلف قسم کے تبصرے آنے شروع ہوگئے ہیں۔ سوشل میڈیا اور ذرائع ابلاغ کے پلیٹ فارمز پر سوڈانیوں نے حیرت اور تلخ طنز سے ملے جلے رد عمل کا اظہار کیا ہے۔ زیادہ تر افراد نے منشیات اور یورینیم کے درمیان مماثلت پر بھی سوال اٹھا دیا۔

دوسروں نے ان نئی وجوہات کے بارے میں حیرت کا اظہار کیا جنہوں نے نشے کے عادی افراد کو منشیات کے بجائے یورینیم کی طرف راغب کردیا ہے۔ صارفین نے کہا نشے کے عادی افراد اب چرس کے دھویں کی بگولوں کی جگہ تابکار دھاتوں کی شعاعیں دیکھنا چاہتے ہیں؟ لوگوں نے کہا افیون کے عادی افراد اب شاید خالصتا پر امن مقاصد کے لیے ایٹمی ری ایکٹر بنانا چاہتے ہیں؟

بہت سے افراد نے اپنے خوف کے بارے میں طنزیہ تبصرہ کیا کہ ایک سوڈانی شہری کے قبضے میں یورینیم کی دریافت کا یہ اچانک اعلان ملک کو بین الاقوامی معائنہ کمیٹیوں کی ’’دشمنی‘‘ کی راہ پر لے جائے گا۔

کیونکہ یورینیم کو بڑے پیمانے پر تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں کی تیاری میں استعمال کیا جاتا ہے، اس لیے ضروری ہے کہ معائنہ کمیٹیوں کے اندیشوں کو دور کرنے کی کوشش کی جائے اور انہیں یقین کے ساتھ اس شک کو دور کرنے کا کافی موقع دیا جائے کہ ضبط شدہ یورینیم تابکار صورت میں نہیں ہے۔

دوسری جانب دیگر تبصروں نے پولیس اور ان کی چوکسی کی بھرپور تعریف کی۔ لیکن تبصرہ نگاروں نے اس پر بھی انتہائی حیرت کا مظاہرہ کیا کہ انسداد منشیات کے جوانوں کو یہ کیسے معلوم ہوگیا کہ یہ دھات یورینیم ہے۔ رائے دھندگان نے کہا ہم حیران ہیں کہ انسداد منشیات فورس کے اہلکاروں کے پاس یورینیم دھات کی شناخت کرنے والے ڈیٹیکٹر بھی ہوتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں