ماہ صیام کے آخری عشرہ کی مناسبت سے مسجد حرام میں خصوصی تیاریاں

مناسک عمرہ اور عبادات ادا کرنے میں سہولیات فراہم کرنے کے لیے تمام انسانی وسائل اور آپریشنل آلات کو متحرک کردیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
6 منٹس read

حرمین شریفین کے امور کی انتظامیہ کے ترجمان ھانی حیدر نے رمضان المبارک کے آخری عشرہ کی مناسبت سے المسجد الحرام میں کی جانے والی تیاریوں کا اعلان کردیا۔ انہوں نے بتایا ہے کہ عازمین عمرہ اور عبادت گزاروں کو سہولیات فراہم کرنے کے لیے تمام انسانی وسائل اور آپریشنل آلات کو متحرک کردیا گیا ہے۔ انتظامیہ بیت اللہ شریف میں آنے والے ضیوف الرحمن کو پورے سکون کے ساتھ عبادات کرنے کا موقع فراہم کرنے کے لیے کوشاں ہے۔ اس سال مکہ مکرمہ میں مسجد حرام میں آنے والے نمازیوں اور معتمرین کی تعدا د 950 ہزار سے زیادہ ہوچکی ہے۔

رمضان المبارک کے آغاز سے روزانہ مسجد حرام میں آنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہوتا جاہا ہے۔ اسی تناسب سے انتظامیہ کے کام کی رفتار میں بھی تیزی لائی جا رہی ہے۔

جراثیم سے پاک صاف ستھرے ماحول کی فراہمی

ھانی حیدر نے بتایا کہ ادارہ ’’ صدارت عامہ برائے امور مسجد حرام و مسجد نبوی‘‘ آخری عشرہ میں مسجد حرام میں جراثیم سے پاک صاف ستھرے ماحول کی فراہمی کے لیے کارروائیاں تیز کردے گا ۔

رمضان کے آخری عشرہ میں مسجد حرام کو روزانہ 10 مرتبہ دھویا جائے گا۔ 4 ہزار سے زیادہ کارکن اس عمل میں شریک ہوں گے۔ ہر صفائی آپریشن میں 80 ہزار لٹر سے زیادہ صفائی کرنے والا مواد اور 1600 لٹر فریشنر کا استعمال کیا جائے گا۔ اس دوران تقریبا 15000 لٹر جراثم کش مواد استعمال کیا جائے گا۔

24 گھنٹے کام کرنے والی 70 سے زیادہ فیلڈ ٹیموں کو مسجد حرام اور اس کے اطراف کو جراثیم سے پاک کرنے کے لیے لیس کیا گیا ہے۔ 500 سے زیادہ خود کار ہینڈ سینیٹائزر تقسیم کیے جائیں گے۔

زم زم کے پانی کی فراہمی

ھانی حیدر نے بتایا کہ ماہ صیام کے آخری عشرہ کے دوران مسجد حرام میں زم زم کے پانی کی فراہمی کی سہولیات کو بھی دو گنا کر دیا جائے گا ۔ ہر روز پانی کے لگ بھگ 2 لاکھ کولرز کو خصوصی گاڑیوں کے ذریعہ نماز کے مقامات پر رکھا جائے گا۔ سعی کی جگہ ، جناز گاہ اور خصوصی افراد کے ہالز میں ماء زم زم کی 200 سبلیں لگائی جائیں گی۔

شاہ فہد کی توسیع اور شاہ عبداللہ کی توسیع میں عام داخلی راستوں اور سیڑھیوں میں مقدس پانی کے 370 تھیلے فراہم کیے جائیں گے۔ 1400 سے زاید کارکن ماء زم زم کی فراہمی کے لیے سرگرم رہیں گے۔

نقل و حرکت کی سہولیات

رمضان کے آخری عشرے میں زائرین کو مسجد حرام کے اندر ایک مقام سے دوسرے مقام تک پہنچانے کے لیے بھی خصوصی انتظامات کیے جائیں گے۔ زائرین کی خدمت کے لیے 5 ہزار سے زیادہ باقاعدہ گاڑیاں اور تقریبا 3 ہزار الیکٹرک گاڑیوں کا بندوبست کیا گیا ہے۔ ان گاڑیوں کے ذریعہ عمرہ زائرین اور نمازیوں کو بہترین سہولت فراہم کی جائے گی۔

’’صدارت عامہ‘‘ نے رمضان المبارک کے موسم میں مسجد حرام کے دروازوں پر 160 سے زیادہ مبصرین کو بھی بھرتی کیا ہے۔ زائرین کے لیے مسجد کے 160 دروازیں کھولے جا جا رہے ہیں۔ دروازوں پر لوگوں کی رہنمائی کے لیے مبصرین موجود رہیں گے۔

لگاتار نگرانی

’’امور حرمین شریفین‘‘ کا ادارہ مسجد حرام کے اندرونی ہالز اور صحنوں کے اندر تکنیکی، انجینئرنگ، رہنمائی اور سائنسی سروسز کی فراہمی کی نگرانی کے لیے 24 گھنٹے فیلڈ ٹورز کو تیز کردے گا۔ تمام متعلقہ محکموں ک ساتھ ملکر کسی بھی مسئلے کو فوری حل کرنے کی کوشش کی جائے گا تاکہ بیت اللہ شریف آنے والوں کی حفاظت کی جا سکے اور ان کی راحت کا سامان کیا جا سکے۔

آپریٹنگ اور دیکھ بھال

آپریشن اور دیکھ بھال کے شعبے میں ادارہ نے مسجد حرام اور اس کے صحنوں میں قومی کیڈرز سے 90 سے زیادہ انجینئرز اور ٹیکنیشن فراہم کر دیے ہیں۔ یہ افراد مسجد میں موجود 200 سے زیادہ ایسکلیٹرز، 14 ایلیویٹرز کی نگرانی کریں گے۔ اسی طرح ، 8 ہزار سپیکرز اور 9 لاؤڈ سپیکرز پر مشتمل ساؤنڈ سسٹم کی مکمل دیکھ بھال کی جائے گی۔ یہ افراد تمام کاموں کی درستی اور احتیاطی تدابیر پر عمل کا جائزہ لیں گے۔ مسجد کے ہر مقام تک امام کی آواز کو یقینی بنانے کے لیے نگران آلات کی فراہمی کی گسی ہے۔ موذن اور جنازے کے جلوس کے مقامات کو دیکھ بھال کی جائے گی۔ راہداریوں اور صحنوں میں ساؤنڈ سسٹم کے لیے ضروری ٹیسٹ کیے جاتے رہیں گے۔ اس ضمن میں جدید ٹیکنالوجیز کا استعمال کرتے ہوئے کسی بھی قسم کا نقص سامنے آنے پر اسے فوری دور کردیا جائے گا۔

سکیورٹی انتظامات اور ہدایات

رمضان المبارک کے آخری عشرہ میں مسجد حرام میں سکیورٹی کے بھی خصوصی اقدامات کیے گئے ہیں۔ ’’صدارت عامہ برائے امور مسجد حرام و مسجد نبوی‘‘ نے آنے والوں کے لیے ہدایت نامہ جاری کیا ہے کہ سکیورٹی اہلکاروں اور ملازمین کے ساتھ تعاون ضروری ہے تاکہ مسجد کے اندر حفاظت کو برقرار رکھا جا سکے اور آنے والوں کو بہترین مذہبی تجربہ حاصل کرنے کا موقع ملے۔

ہدایت نامہ میں کہا گیا ہے کہ زائرین کو عمرہ کرنے اور اس میں بتائے گئے اوقات کی پابندی کرنے کے لیے اجازت نامہ حاصل کرنا ہوگا۔ عازمین اور نمازی تصویریں نہ کھینچیں۔ کسی ایسے نامناسب رویے سے گریز کریں جس سے مسجد حرام کے اندر آنے والوں کی عزت مجروح ہو۔ مسجد حرام کے تقدس کا خیال رکھتے ہوئے آواز بلند نہ کی جائے۔ نماز، ذکر اور دعا کے اوقات کے دوران خاموش رہا جائے۔ بچوں پر خصوصی توجہ دی جائے۔ بچوں کو بغیر نگرانی کے مت چھوڑا جائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں