امریکی ایئرنیشنل گارڈزکا اہلکارخفیہ معلومات افشا کرنے کے الزام میں گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا نے خفیہ دفاعی معلومات کی ترسیل کے سلسلے میں ایئر نیشنل گارڈ کے ملازم جیک ٹیکسیرا کو گرفتارکرلیا ہے۔

امریکا کے اٹارنی جنرل میرک گارلینڈ نے محکمہ انصاف میں ایک مختصر بیان میں کہا:’’ایف بی آئی کے ایجنٹوں نے جمعرات کی سہ پہر ٹیکسیرا کو بغیر کسی واقعے کے حراست میں لے لیا ہے‘‘۔

اطلاعات کے مطابق امریکی ریاست میساچوسٹس میں ایئرنیشنل گارڈز کے ایک اہلکار کی انتہائی خفیہ امریکی دستاویزات افشاکرنے کے الزام میں گرفتاری عمل میں آئی ہے۔

نام ظاہرنہ کرنے کی شرط پربات کرنے والے ذرائع نے اس گرفتاری کی مزید تفصیل نہیں بتائی۔ایف بی آئی نے تحقیقات میں پیش رفت پرتبصرہ کرنے کی درخواست کا فوری طور پر جواب نہیں دیا۔

محکمہ انصاف نے گذشتہ ہفتے باضابطہ فوجداری تحقیقات کا آغاز کیا تھا اور پینٹاگون نے کہا ہے کہ گذشتہ برسوں کے دوران میں خفیہ امریکی معلومات کے اجراء سے ہونے والے نقصانات کا اندازہ لگایاجا رہاہے۔

نیویارک ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق ایک آن لائن گروپ کے سربراہ نے خفیہ دستاویزات پوسٹ کی تھیں اور وہ میساچوسٹس میں ایئرنیشنل گارڈ کا رکن ہے۔

اخبارنے انٹرویوز اور دستاویزات کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ نیشنل گارڈزکے اہل کار جیک ٹیکسیرا نے ٹھگ شیکرسنٹرل نامی ایک آن لائن گروپ کی قیادت کی جہاں قریباً 20 سے 30 افراد نے بندوقوں، نسل پرستانہ میمز اور ویڈیو گیمز سے اپنی محبت کا اظہار کیا۔

قبل ازیں محکمہ دفاع پینٹاگون نے ایک الگ بیان میں کہا ہے کہ خفیہ معلومات کا افشا 'دانستہ اور مجرمانہ فعل' تھا۔

پینٹاگون کے ترجمان بریگیڈیئرجنرل پیٹ رائیڈر نے ایک بیان میں کہا ہے کہ خفیہ معلومات کے افشا سے سے متعلق سوالات محکمہ انصاف کے حوالے کردیے گئے ہیں۔

امریکی صدرجوبائیڈن نے بھی جمعرات کے روز کہا تھا کہ تفتیش کار اس لیک کے ذمے دار ذرائع کا پتالگانے کے قریب پہنچ چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں