عراقی وزیر جال میں پھنس گئے، ریسٹورنٹ نے موجودگی کا فائدہ اٹھا کر اشتہار بنا لیا

ریسٹورنٹ کے خلاف مقدمہ، معمر افراد کو مفت افطاری کے حوالے سے وزیر احمد الاسدی نے ریسٹورنٹ کی تعریف کی تھی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

عراق کے وزیر محنت و سماجی امور نے بغداد کے ضلع الجادریہ میں ’’مادو‘‘ کے نام سے معروف ریسٹورنٹ کے خلاف مقدمہ دائر کردیا ہے۔ مقدمہ میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ پیر کو وزیر احمد الاسدی کی موجودگی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے ریسٹورنٹ نے ان کی موجودگی کو پروپیگنڈا کے مقاصد کے لیے استعمال کیا ہے۔

وزارت کے میڈیا ایڈوائزر کاظم العطوانی نے مختصرا بتایا کہ یہ ریسٹورنٹ ترک اور عراقی کھانوں میں مہارت رکھتا ہے۔ وزیر کی موجودگی میں ویڈیو بنائی گئی اور اس میں ریسٹورنٹ کی خوبیوں کو بیان کیا گیا۔

بیان میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ ہمیں ایک ریستوران کی انتظامیہ کی طرف سے تیار کردہ ایک ویڈیو کلپ سے حیرت ہوئی جس میں وزیر کی موجودگی میں معمر افراد کی دیکھ بھال کے ادارے دارالرشاد میں متعدد بزرگ افراد کے لیے افطاری کی ضیافت کا اہتمام کیا گیا تھا۔ ضیافت کے دوران ریستوراں کی انتظامیہ نے وزیر سے ریستوراں کے بارے میں ان کی رائے پوچھی۔ مکمل طور پر بے ساختہ انداز میں وزیر نے ان کے کام کی تعریف کی اور ان کے کام کو نجی شعبے کے منصوبوں کے لیے ایک طرح کی حوصلہ افزائی کے طور پر پیش کیا۔ اس ویڈیو کو تلاش کرکے ’’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘‘ نے ذیل میں پیش کیا ہے۔ بیان میں کہا گیا کہ بعد میں اس ویڈیو کو سوشل میڈیا پر پھیلا دیا گیا جس میں وزیر نے "مداؤ" کی تعریف اس انداز میں کی جس سے وہ ریستوران کے لیے پروپیگنڈا سٹار کے طور پر ظاہر ہو رہے ہیں۔

کاظم العطوانی نے مزید بتایا کہ حالانکہ صورت حال اس حقیقت مختلف تھی۔ اس سے یہ واضح ہوتا ہے کہ وزیر کو کسی سیٹ ٹریپ کی طرح بے نقاب کیا گیا تھا۔ کیونکہ "ریسٹورنٹ انتظامیہ نے ان کی گفتگو کا فائدہ اٹھایا، اس کا کچھ حصہ کاٹ کر اسے تیار کردہ اشتہاری فلم میں ڈالا گیا جو ادبی سیاق و سباق کے خلاف ہے۔ ریسٹورنٹ کی انتظامیہ کے خلاف نجی گفتگو سے فائدہ اٹھانے اور اس کے ایک حصے کو نامناسب پروپیگنڈے کے مقاصد کے لیے کاٹنے پر عدالت میں مقدمہ دائر کردیا گیا ہ ہے۔

ریستوراں کی انتظامیہ نے جمعرات کو فیس بک کے ایک بیان میں جواب دیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ ’’ مادو‘‘ ہر سال رمضان کے مقدس مہینے کے دوران بزرگوں کی دیکھ بھال کے ادارے ’’الرشاد‘‘ میں مقیم بزرگوں کے لیے مفت افطاری کا انتظام کرتا ہے۔ وزیر لیبر و سماجی امور نے اس اقدام کی تعریف کی تھی۔ انہوں نے اس اہم طبقے کی حمایت کرنے والے ایسے انسانی اقدامات کے قیام کی حوصلہ افزائی کی۔

تاہم جو کچھ بعض میڈیا اداروں اور سوشل نیٹ ورکنگ سائٹس پر شائع کیا گیا اس میں کوئی صداقت نہیں۔ یہ من گھڑت خبریں ہیں۔ ریسٹورنٹ نے اپنے بیان میں مقدمہ کے حوالے سے کوئی وضاحت نہیں کی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں