باغی سریع الحرکت فورسز کو شکست دینے میں کئی دن لگ سکتے ہیں: سوڈانی فوجی عہدیدار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سوڈانی فوج کے ایک اہلکار نے اتوار کے روز العربیہ اور الحدث چینلز کو ایک خصوصی بیان میں کہا ہے کہ تمام ریاستوں میں ’سریع الحرکت فورسز‘[ آر ایس ایف] کو شکست دینے میں کئی دن لگ سکتے ہیں۔

سوڈان میں مسلح افواج کی جنرل کمان نے ام درمان میں کرری (جبل سرکاب) میں سریع الحرکت فورسز کے سب سے بڑے اڈے کو اپنے کنٹرول میں لینے کا دعویٰ کیا ہے۔ جنرل کمان کا کہنا ہے کہ مسلح افواج نے فوجی اڈے کے تمام ہتھیار ، اسلحہ اور گولہ باروق قبضے میں لے لیا ہے۔اس کے علاوہ کوستی اور کادقلی کےمقامات پر موجود اڈے بھی سریع الحرکت فورسز سے چھین لیے گئے۔

قبل ازیں لبنانی فوج نے نیل الارزق ریاست میں سریع الحرکت فوسز کی گاڑیوں اور گولہ بارود کو قبضے میں لے لیا تھا۔ اس دوران "العربیہ" اور "الحدث" کے نامہ نگاروں نے بھاری توپ خانے اور گولہ بارود کی آوازیں سننے کی اطلاع دی تھی۔ شمالی دافر ریاست کے علاقے الفاشر کےبعض مقامات پر فائرنگ کی آوازیں آ رہی ہیں۔ العربیہ کے نامہ نگار نے مزید کہا کہ سوڈانی فوج نے مراوی ایئرپورٹ کو چاروں اطراف سے گھیرے میں لے رکھا ہے۔

اس سے پہلے مسلح افواج کی جنرل کمان نے ایک بیان شائع کیا جس میں کہا گیا تھا کہ ہم اپنی جنگ کو استحکام اور توجہ کے ساتھ آگے بڑھا رہے ہیں۔ ہم آپریشن کی عمومی پوزیشن کو مکمل طور پر کنٹرول کر رہے ہیں اور باغیوں کے ان دعووں میں کوئی صداقت نہیں ہے کہ جنرل کمانڈ اس کا محاصرہ کیا گیا ہے۔ یہ درست ہے کہ جھڑپیں اب بھی ادھر ادھر ہو رہی ہیں لیکن حالات استحکام کی طرف جا رہے ہیں اور فکر کی کوئی بات نہیں ہے۔"

اس قبل سریع الحرکت فوسز نے ایک ویڈیو جاری کی تھی جس میں اس نے دعویٰ کیا تھا کہ منحرف فوج نے جنرل کمان کے ایک اڈے پر حملہ کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں

  • مطالعہ موڈ چلائیں
    100% Font Size