سابق امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو صدارتی انتخاب کی دوڑ سے پیچھے ہٹ گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے دور کے وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے ہفتے کے روز 2024ء میں صدارتی انتخابات میں حصہ نہ لینے کا اعلان کیا ہے۔

Advertisement

ذاتی فیصلہ

پومپیو نے سوشل نیٹ ورکنگ سائٹ "ٹویٹر" پر اپنے آفیشل پیج پر شائع ہونے والے ایک ویڈیو کلپ میں کہا کہ "یہ ہمارا لمحہ نہیں ہے " اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ آنے والے صدارتی انتخابات میں امیدوار نہ بننا ان کا "انتہائی ذاتی فیصلہ ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ میں نے اور میری اہلیہ نےکیا ہے ، موجودہ وقت میرے اور میرے اہل خانہ کے لیے مناسب نہیں ہے‘‘۔

اپنے بیان میں سابقہ امریکی سکریٹری خارجہ نے مستقبل میں صدارتی الیکشن میں حصہ لینے کے امکانات برقرار رکھے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ "ابھی بھی بہت سارے مواقع موجود ہیں کہ وقت اس کے لیے زیادہ موزوں ہوسکتا ہے کیونکہ صدارتی قیادت زیادہ ضروری ہوجاتی ہے۔"

ٹرمپ کے دور کے سابق وزیر خارجہ کی حیثیت اور ری پبلیکن پارٹی کے ایک لیڈر کی حیثیت سے طویل عرصے سے سیاسی میدان میں سرگرم رہنے کے باوجود عوامی حلقوں میں ان کی کوئی خاص پذیرائی نہیں۔ اس کا اندازہ میڈیا میں ہونے والے رائے عامہ کے جائزوں سے ہوتا ہے جن میں ان کی عوامی مقبولیت ایک یا زیادہ سے زیادہ دو فی صد تک ہے۔

وائٹ ہاؤس تک رسائی کا کنٹرول

امریکا میں 2024ء کے دوران 60 ویں صدارتی انتخابات ہوں گے جو منگل 5 نومبر 2024 کو شیڈول ہوں گے۔ 2020 کے بعد آبادی کی تقسیم کے مطابق انتخابی ووٹوں کی تقسیم کے بعد یہ پہلے صدارتی انتخابات ہوں گے۔

توقع کی جارہی ہے کہ 2024 کے انتخابات میں وائٹ ہاؤس تک پہنچنے کے متوقع امیدواروں میں 80 سالہ جو بائیڈن ، 76 سالہ ڈونلڈ ٹرمپ ،58 سالہ کملا ہیریس ، فلوریڈا کے سابق گورنر44 سالہ رون ڈیسنٹیس ، کیلیفورنیا کے گورنر55 سالہ جاون نیوزم ،ٹیکساس کے گورنر 64 سالہ گریگ ایبٹ ،63 سالہ مائیک پینس،56 سالہ امریکی اداکارہ لز چینی اور 76 سالہ کاروباری شخصیت پیری جانسن شامل ہوں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں