لڑکوں کا جنون، شکاگو کے ایک حصہ پر قبضہ کی کوشش کرڈالی

ایک گولی 6 سالہ لڑکے کے بازو میں لگی اور دوسری گولی 17 سالہ لڑکے کی ٹانگ میں لگی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

امریکہ ریاست شکاگو میں لڑکوں پر جنون طاری ہوگیا اور لڑکوں کی بڑی تعداد نے شکاگو کی مرکزی سڑکوں کا کنٹرول سنبھال لیا۔ لڑکوں نے گزرنے والی کاروں کی کھڑیاں توڑنی شروع کردیں۔ پیدل چلنے والوں پر بھی حملے شروع کردئیے۔ جنونی لڑکوں نے سیاحوں کو بھی تشدد کا نشانہ بنایا۔ امریکی ٹی وی نیٹ ورک فاکس نیوز کے مطابق فائرنگ کی آواز سن کر لوگ گھبرا کا دوڑنے لگے۔
میڈیا رپورٹرز اور کوریج کرنے والا عملہ موقع پر پہنچ گیا۔ لڑکوں کے گروپوں نے بلو ٹوتھ سپیکر کے ذریعہ دھماکہ خیز میوزک بجانا شروع کردیا اور فٹ پاتھوں اور سڑکوں کے درمیان گھومنا شروع کردیا۔ درجنوں لڑکوں نے شکاگو کے ایک آرٹ انسٹی ٹیوٹ ملینیم پارک تک پہنچنے کی کوشش کی۔ یاد رہے 21 سال سے کم عمر افراد کے لیے مخصوص گھنٹوں کے بعد ملینیم پارک تک رسائی ممنوع ہے۔
لڑکوں کے گروپ کے ارکان سڑک پر امڈ آئے اور گاڑیوں پر اوپر نیچے کود پڑے۔ ان کی کھڑکیاں توڑ دیں اور اندر والوں پر حملہ کردیا جن میں ایک خاتون کا شوہر بھی شامل تھا۔ اس کی گاڑی کے ڈرائیور نے لڑکوں پر حملہ کیا تو لڑکوں نے اسے بری طرح مارا۔
سیکڑوں پولیس اہلکاروں اور افسران نے SWAT کی خصوصی ٹیموں کی مدد سے شہر کے مرکز کے کھوئے ہوئے نظم کو بحال کرنے کی کوشش کی۔ علاقے میں بار بار فائرنگ کی اطلاع مل رہی تھی اور یہ علاقہ ہالی ووڈ کی ہارر فلم کے منظر کی طرح دکھائی دے رہا تھا جہاں پولیس کو اسکارٹ کرتے ہوئے دیکھا گیا تھا۔ افراتفری سے بچنے کے لیے سیاح اپنی گاڑیوں یا ہوٹلوں میں گھبرا گئے۔ مرکزی سڑک پر ٹریفک ٹھپ ہو کر رہ گئی۔
پولیس کے حوالے سے مقامی میڈیا میں بتایا گیا کہ ایک گولی 6 سالہ بچے کے بازو میں لگی اور دوسری 17 سالہ لڑکے کی ٹانگ میں لگی ہے۔ ان دونوں کو قریبی ہسپتال منتقل کردیا گیا۔ پولیس نے معاملہ پر قابو پالیا اور تمام لڑکے منتشر ہوگئے۔


مقبول خبریں اہم خبریں