سعودی عرب میں عید الفطر کے لیے سفر کے دوران حفاظتی تجاویز اپنانے کی ہدایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب میں اس ہفتے کے آخر میں عید الفطر منائی جائے گی۔ جیسے جیسے عید کی تعطیلات قریب آ رہی ہیں، بہت سے مقامی شہری اور رہائشی اپنے عزیز و اقارب کے ساتھ عید گزارنے کے لیے دوسرے شہروں کا رخ کررہے ہیں۔ شاہراؤں پر ٹریفک کے بڑھتے ہوئے ازدحام کے بارے میں حکام کا کہنا ہے کہ اگر سفر سے پہلے احتیاطی تدابیر اختیار نہ کی گئیں تو حفاظتی خدشات لاحق ہو سکتے ہیں۔

سفر کے دوران حادثات سے بچنے کے لیے سعودی عرب کی روڈز جنرل اتھارٹی نے اس سال ایک مہم کا آغاز کیا ہے تاکہ مسافروں کو سفر سے پہلے اور دوران سفر احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی ضرورت پر بیداری پیدا کی جا سکے۔


سفر کے لیے عمومی حفاظتی نکات

ٹویٹر پر شیئر کیے گئے مہم کے پوسٹر میں اتھارٹی نے خبردار ہے کیا کہ چھٹیوں کے دوران حادثات میں 15 فیصد اضافہ ہوتا ہے۔ لہذا، کار میں سفر کرنے کے خواہشمند افراد سے سیٹ بیلٹ کا صحیح استعمال کرنے، رفتار کی حد کا پابند رہنے اور ڈرائیونگ کے دوران موبائل فون کا استعمال نہ کرنے کی اپیل کی ہے۔

ڈرائیوروں کو یہ بھی یقینی بنانا چاہیے کہ وہ سفر سے پہلے مناسب نیند لیں اور تھکے ہوئے نہ ہوں۔

اس بات کو یقینی بنائیں کہ گاڑی اچھی حالت میں ہو اور گھنٹوں طویل سفر کے لیے تیار ہے۔

جہاں تک بچوں کا تعلق ہے، انہیں ہمیشہ اپنی مقرر کردہ نشستوں پر ہونا چاہیے۔

ہنگامی سامان

ڈرائیوروں کو اس بات کو یقینی بنانا چاہیے کہ ان کی گاڑیوں میں درج ذیل سامان موجود ہے۔
فاضل ٹائر اور ٹائر بدلنے والی کٹ،
ابتدائی طبی امداد کی کٹ،
آگ بجھانے کا آلہ اور
انتباہی مثلث۔

کیا کار کے بریک کام کر رہے ہیں؟

ڈرائیوروں کو سفر سے پہلے یقین کر لینا چاہیے کہ آیا گاڑی کے بریک ٹھیک سے کام کر رہے ہیں۔

گاڑی کے ٹائر چیک کریں

ٹائروں کا معائنہ کرنے اور ان کی میعاد ختم ہونے کی تاریخ کو چیک کرنے سے سفر کے دوران حادثات کو روکنے میں مدد مل سکتی ہے۔

اتھارٹی کے مطابق کچھ ٹائروں کی میعاد ختم ہونے کی تاریخ چھوٹی کاروں کے لیے دو سال ہے، جب کہ ٹرکوں یا بڑی گاڑیوں کے لیے یہ پانچ سال ہے۔

سفر کے دوران ٹائر پھٹ جائے تو کیا کریں؟

اگر گاڑی چلاتے ہوئے ٹائر پھٹ جائے تو پہلے آپ کو گاڑی پر کنٹرول برقرار رکھنے کی کوشش کرنی چاہیے۔
ڈرائیور حضرات سے التماس کی گئی ہے کہ وہ آہستہ آہستہ اپنے پاؤں گیس کے پیڈل سے اٹھائیں اور گاڑی کو آہستہ آہستہ روکنے کے لیے گاڑی کے بریک نہ دبائیں۔

اگر ڈرائیور خود کو ایسی صورت حال میں پاتے ہیں، تو انہیں گاڑی کے کنٹرول میں آنے کے بعد اسے کسی محفوظ مقام پر پارک کرکے دوسری گاڑیوں کی حفاظت کو بھی یقینی بنانا چاہیے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں