ناقابل یقین منظر، گولیوں کی گھن گرج میں افطار کراتے ہوئے سوڈانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سوڈان کے دارالحکومت میں فوج اور نیم فوجی ریپڈ سپورٹ فورسز کے درمیان خونریز جھڑپوں میں شدت کے دوران ، شہر میں اشیائے خورونوش کی قلت کے باوجود لوگ رمضان کی قدیم روایات پر کاربند ہیں۔

سوشل میڈیا پر پوسٹ ہونے والی ایک ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ خرطوم کے متعدد شہری غروب آفتاب سے عین قبل ایک سڑک کنارے زمین پر دسترخوان بچھائے بیٹھے ہیں اور ہر راہ گیر کو افطار کے لیے مدعو کر رہے ہیں۔

یہ ویڈیو جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی، سوشل میڈیا پر ملک اور شہریوں کو مشکل حالات سے گزرنے کے باوجود ایک قدیم انسانی روایت کی پاسداری کو بے حد سراہا گیا۔

سوڈان میں گذشتہ ہفتے کے روز سے، ملک کی دو بڑی فوجی قوتوں کے درمیان پرتشدد لڑائی کے واقعات میں 144 سے زائد شہری ہلاک ہوچکے ہیں، اور درجنوں زخمی علاج اور طبی خدمات سے محروم ہیں۔

کل شام جنگ بندی کے اعلان کے باوجود آج بدھ کو دونوں فریقوں کے درمیان پرتشدد جھڑپیں دوبارہ شروع ہو گئی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں