امدادی سامان کی تقسیم کے دوران بھگڈر، 85 یمنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے

حادثہ جمعرات کو ایک سکول میں امداد کی تقسیم کے دوران پیش آیا، ایک دہائی کے دوران بھگڈر مچنے کا مہلک ترین کا واقعہ ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

حوثی حکام نے کہا ہے کہ یمن میں امداد کی تقسیم کے دوران بھگڈر سے 80 سے زیادہ افراد ہلاک اور سینکڑوں زخمی ہوئے ہیں۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق یہ حادثہ جمعرات کو ایک سکول میں امداد کی تقسیم کے دوران پیش آیا۔ ایک دہائی کے دوران بھگڈر مچنے کا مہلک ترین کا واقعہ ہے۔

جزیرہ نما عرب کے غریب ترین ملک یمن میں یہ سانحہ عیدالفطر کی تعطیلات سے دو دن قبل پیش آیا۔

ایک حوثی سکیورٹی اہلکار نے بتایا کہ ’دارالحکومت کے باب الیمن ضلع میں بھگڈر کے بعد سے کم از کم 85 افراد ہلاک اور 322 زخمی ہو گئے ہیں۔‘

انہوں نے نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر اے ایف پی کو بتایا کہ ’مرنے والوں میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔‘
محکمہ صحت کے ایک اہلکار نے ہلاکتوں کی تصدیق کی ہے۔ عینی شاہدین کے مطابق سینکڑوں لوگ امداد کے حصول کے لیے جمع تھے۔

باغیوں کی خبر رساں ایجنسی ’’سبا‘‘ کے مطابق وزارت داخلہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ہلاک اور زخمی ہونے والے افراد کو قریبی ہسپتالوں میں منتقل کیا گیا ہے اور امداد تقسیم کرنے کے ذمہ داران کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

ہلاک ہونے والے افراد سے متعلق وزارت داخلہ نے مکمل تعداد کے بارے میں نہیں بتایا لیکن کہا کہ ’کچھ تاجروں کی جانب سے رقم کی تقسیم کے دوران بھگڈر مچنے سے متعدد افراد ہلاک ہوئے۔‘

حوثی باغیوں کے سربراہ مہدی المشاط نے کہا ہے کہ تحقیقات کے لیے ایک کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے۔ ایک حوثی سکیورٹی اہکار نے بتایا کہ شک کی بنیاد پر تین افراد کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی ویڈیوز میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک بڑے کمپلیکس میں لاشیں پڑی دکھائی دے رہی ہیں جبکہ لوگوں کی چیخ و پکار بھی سنائی دے رہی ہے۔

اے ایف پی آزادنہ طور پر فوٹیج کی تصدیق نہیں کر سکی۔

جب رشتہ دار اپنے پیاروں کو ڈھونڈنے ہسپتال پہنچے تو سخت سکیورٹی کے باعث بہت سے افراد کو اندر جانے کی اجازت نہیں دی گئی کیونکہ اعلٰی حکام بھی زخمیوں کی عیادت کے لیے موجود تھے۔

سکول کے ارگرد بھی سکیورٹی تعینات ہیں۔ سکیورٹی اہلکاروں نے ہلاک اور زخمی افراد کے رشتہ داروں کے اندر جانے سے روک دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں