مکہ مکرمہ: دل دو مرتبہ رکنے کے بعد مصری معتمر کی جان بچا لی گئی

بارہ اور پندرہ منٹ کے لیے دل نے کام کرنا چھوڑ دیا، 32 سالہ معتمر سانس کی شدید تکلف کے باعث بے ہوش ہوگیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مکہ مکرمہ میں جان بچانے والی ٹیمیں عمرہ کرنے کے آئے 32 سالہ مصری کی جان بچانے میں کامیاب ہوگئیں۔ اس مصری کا دل دو مرتبہ رک گیا تھا۔ ان دو مرتبہ میں دل نے 27 منٹ تک کام چھوڑے رکھا۔ مصری معتمر کو سانس کی شدید تکلیف ہوئی اور وہ بے ہوش ہوگیا تھا۔

مکہ مکرمہ ہیلتھ کاکس نے بتایا ہے کہ مریض کو ایمبولینس ٹیموں نے حرم ایمرجنسی سنٹر منتقل کیا تھا۔ حرم ایمرجنسی سنٹر منتقلی کے دوران اس کا دل بند ہو گیا اور ایمرجنسی ٹیم نے کارڈیک آپریشن کر کے تیزی سے مداخلت کی۔ 12 منٹ کی مدت کے لیے اس کی کارڈیو پلمونری ریسیسیٹیشن (سی پی آر) کی گئی اور اس کے دل نے کام شروع کیا۔ مریض کے حرم ایمرجنسی سینٹر پہنچنے کے بعد اسے ایک اور ہارٹ سٹاپ کا مرحلہ درپیش آگیا۔ ایمرجنسی سینٹر کی ٹیم اس مرتبہ 15 منٹ تک کارڈیو پلمونری ریسیسیٹیشن کرتی رہی اور بجلی کے جھٹکے دیتی رہی۔

سعودی پریس ایجنسی (ایس پی اے ) کے مطابق علاج کرنے والی میڈیکل ٹیم نے وضاحت کی کہ ضروری طبی معائنے اور ایکسرے کیے گئے جس میں مریض کے دل کے پٹھوں میں بے قاعدگی اور پھیپھڑوں میں شدید سوزش ظاہر ہوئی۔ مریض کو مصنوعی سانس دیا جاتا رہا اور اسے ہسپتال کے انتہائی نگہداشت کے شعبے (آئی سی یو) میں داخل کیا گیا تھا۔

میڈیکل ٹیم نے بتایا کہ مریض کی حالت اب قدرے بہتر ہے اور سانس کی حالت مستحکم ہونے کے بعد اسے مصنوعی سانس دینا ختم کردیا گیا ہے۔ اہم علامات معمول پر آگئی ہیں۔ مریض اب بھی فالو اپ اور علاج کے مراحل سے گزر رہا ہے۔

مکہ مکرمہ ہیلتھ کاکس نے بتایا ہے کہ زائرین اور معتمرین کو خدمات فراہم کرنے کے لیے صحت کی تمام سہولیات کی مکمل تیاری کی گئی ہے۔ پوری صلاحیت اور اعلیٰ تعلیم یافتہ طبی عملے کے ساتھ اعلیٰ ترین معیار کی بہترین طبی دیکھ بھال فراہم کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

واضح رہے اجیاد ایمرجنسی ہسپتال گزشتہ سال 2022 کے دوران 637 انتہائی نگہداشت کے مریضوں کو طبی خدمات فراہم کرنے میں کامیاب رہا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں